امریکی کانگریس کا عدم پیشی پر اٹارنی جنرل اور مشیرکیخلاف کارروائی کا فیصلہ

امریکی کانگریس کا عدم پیشی پر اٹارنی جنرل اور مشیرکیخلاف کارروائی کا فیصلہ

واشنگٹن (اظہر زمان، بیوروچیف) امریکی کانگریس کے ایوان نمائندگان سے اٹارنی جنرل اور وائٹ ہاؤس کے ایک سابق مشیر کو پیش ہونے سے انکار کرنے پر ان کیخلاف عدالت میں مقدمہ دائر کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ ایوان نے ایک قرارداد کے ذریعے جوڈیشری کمیٹی کا اختیار دیا ہے کہ وہ ان دو حکام کیخلاف تادیبی کارروائی کا عمل شروع کرسکتی ہے۔ قرارداد میں صدر ٹرمپ کیخلاف گزشتہ انتخابات میں روس کیساتھ ملی بھگت کرنے کے الزام کی تفتیش کرنیوالے خصوصی تفتیش کار رابرٹ ملر کو ہدایت کی ہے کہ وہ اس سلسلے میں گرینڈ جیوری کی معلومات بھی کانگریس کو فراہم کرے۔روزنامہ ”پاکستان“ ایک روز قبل یہ اطلاع دے چکا تھا کہ کانگریس یہ قرارداد منظور کرنیوالی ہے۔ قرارداد کے حق اور مخالفت میں پارٹی پالیسی کے مطابق ووٹ ڈالے گئے۔ مخالفت میں 191 اور حق میں 229 ووٹ پڑنے سے قرارداد منظور ہوئی۔قرارداد میں جوڈیشری کمیٹی کو اختیار دیا گیا ہے کہ وہ اٹارنی جنرل ولیم بر کو طلب کرنے کا حکم عدالت میں لے جا کر تعمیل کروا سکتی ہے۔ تاہم اس دوران کمیٹی اور محکمہ انصاف کے درمیان ایک سمجھوتہ طے پاگیا ہے جس کی وجہ سے محکمے کو کچھ مہلت دیدی گئی ہے جس کا مطلب یہ ہے کہ کمیٹی فوری طور پر اٹارنی جنرل کو طلب کرنے کا معاملہ عدالت نہیں لے جائے گی۔ تاہم قرارداد نے واضح الفاظ میں کانگریس کی کمیٹیوں کو یہ اختیار دیدیا ہے کہ وہ حکومتی اہلکاروں اور ٹرمپ کے ان مشیروں کیخلاف قانونی کارروائی کرسکتی ہے جو اس کے حکم کی تعمیل نہ کریں۔

امریکی کانگریس

مزید : صفحہ اول