جمعیت علماء اسلام (س) کااجلاس، سمیع الحق کے قاتلوں کی عدم گرفتاری پر تشویش کا اظہار

جمعیت علماء اسلام (س) کااجلاس، سمیع الحق کے قاتلوں کی عدم گرفتاری پر تشویش کا ...

پبی (نما ئندہ پاکستان)جمعیت علماء اسلام کی مرکزی مجلس شوری کا اجلاس آج دارالعلوم حقانیہ اکوڑہ خٹک میں منعقد ہوا ہے جس میں ملک بھر سے جمعیت علماء اسلام کی شوریٰ کے ارکان نے شرکت کی، اجلاس میں عالمی حالات امتِ مسلمہ کے مسائل، ایران، امریکہ کشیدگی ایران سعودیہ جنگ پاکستان کی اقتصا دی سیاسی اورمعاشرتی حالت دینی مدارس کے خلاف حکومت کی معاندانہ پالیسی اورجمعیت کی تنظیمی امور پر تفصیل سے تبادلہ خیال کیاگیا،ممبران شوریٰ کی تجاویزپر مولاناحامد الحق حقانی امیر مرکزیہ جمعیت علماء اسلام پاکستان نے فیصلوں کا اعلان اورپالیسی خطاب کرتے ہوئے واضح کیا، کہ جمعیت علماء اسلام عوامی مسائل کو اجاگر کرنے کمرتوڑ مہنگائی کا شکار عوام کی آواز بلند کرنے کیلئے اپنا کردار اداکرے گی، انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی سے قوم نے جو توقعات وابستہ کی تھیں وہ خاک میں مل گئی ہیں، اورحکومت نے اسلامی جمہوریہ پاکستان کویہودونصاریٰ کے مالیاتی اداروں کے پاس گروی رکھ دیا ہے، اورآئی ایم ایف کی معاشی غلامی میں دے دیا ہے، موجودہ حکومت کے خلاف عوامی تحریک کو منظم کرتے ہوئے جمعیت علماء اسلام اپنا قائدانہ کردار اداکرے گی، انہوں نے کہا کہ نام نہاد عالمی برادری، امریکہ کی قیادت میں افغانستان، لیبیا، عراق، شام اوردیگر اسلامی ممالک کو برباد کرنے کے بعد پاکستان کو برباد کرنے کا منصوبہ بنارہے ہیں، امریکہ کی ایران کے ساتھ کشیدگی جس جنگ کی طرف انسانیت کو دھکیل رہی ہے،اس سے خطے میں ایسی تباہی آئے گی،جس کی تاریخ میں مثال نہیں ملتی، امریکہ، ہمارے خطے میں جنگ کی آگ بڑھکانے سے باز رہے،ورنہ امت مسلمہ امریکہ کیخلاف صف آراء ہوگی اورجمعیت علماء اسلام کے کارکن امت مسلمہ کا ہر اول دستہ ثابت ہونگے اجلاس میں شہید اسلام وجہاد افغانستان شہید ناموس رسالت حضرت مولانا سمیع الحق شہید کے قاتلوں کی سات ماہ ہونے کے باوجود عدم گرفتاری پر شدید تشویش کا اظہار کیا گیا اورحکومت وقت سے فی الفور انکے قاتلوں کی گرفتاری اوردرپردہ اس سازش میں شریک ملک ودین دشمن قوتوں کو منظر عام پر لانے کا مطالبہ کیا گیا۔اجلاس میں ملعونہ عاسیہ مسیح کوملک سے باہر بھیجنے کے حکومتی فیصلے کی شدید مذمت کی گئی۔ مولانا حامد الحق حقانی نے واضح کیا کہ رابطہ عالم اسلامی کے اجلاس میں جمعیت کی طرف سے جو تجاویز پیش کی گئیں ان میں حرمین شریفین کے تحفظ اوریمن، سعودیہ، تصادم کو مذاکرات کے ذریعہ حل کرنے پر زور دیا گیا اوررابطہ عالم اسلامی، اسلامی سربراہی کانفرنس اوردیگر تنظمیوں کو امت مسلمہ کے مسائل کو حل کرانے کیلئے دانشمندانہ حکمت عملی مرتب کرنے کی اپیل کی گئیں، مولاناحامد الحق نے کہا کہ جمعیت اسلامی ممالک کے سفارتکاروں کے ساتھ رابطہ اورملاقات کرکے جمعیت کی طرف سے تجاویز پر مشتمل دستاویز پیش کرے گی۔جمعیت علماء اسلام کے امیر مرکزیہ نے پرزور الفاظ ہیں مولانا سمیع الحق شہید کے مشن کو جاری رکھنے کا اعلان کیا، اور نفاذ شریعت کے راستے میں رکاوٹ بننے والی تنظیموں، اداروں، سیکولر جماعتوں اورسیاسی جماعتوں پر واضح کیا کہ وہ جمعیت کے مشن اورنفاذ شریعت کے راستے میں رکاوٹ نہ بنیں ورنہ انہیں روند دیا جائے گانفاذ شریعت اسلامی نظام اس ملک کا مقدر ومستقبل ہے، جسے دنیا کی کوئی طاقت روک نہیں سکتی، انہوں نے ملک میں پھیلی ہوئی بدامنی، دھشت گردی، ناانصافی مہنگائی غربت جہالت اورمعاشرتی برائیوں کے خاتمے کیلئے جمعیت کی طرف سے بھرپور تحریک چلانے کا اعلان کیا، بالخصوص فاٹا انضمام کے بعد اضلاع میں ملک آئین سے بغاوت کی حالیہ لہر پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے اسے قبائل کو ان کے حقوق سے محروم رکھنے کی سترسالہ تاریخ کا حوالہ دیا اوراعلان کیا کہ جمعیت علماء اسلام ان اضلاع میں سیاسی عمل کا متحرک حصہ بن کر قبائلی عوام کو ان کے حقوق دلانے کی جدوجہد کرے گی،انہوں نے واضح کیاکہ تاریخ کی شہادت یہ ہے کہ قبائیلی عوام محب وطن اور اسلامی نظام سے گہری محبت رکھتے ان کے مسائل کو سمجھنے اورحل کئے بغیر انہیں زیر نہیں کیاجاسکتا، جمعیت علماء اسلام ان کے مطالبات کی مکمل حمایت کرتی ہے، انہوں نے واضح کیا کہ قبائل صوبہ خیبر کے پی کے کے ساتھ انضمام شہید قائد جمعیت مولانا سمیع الحق شہید رحمہ اللہ کی جدوجہد اورقائدانہ کردار کانتیجہ ہے،ہم انہیں بے یارومدد گار نہیں چھوڑیں گے، انہوں نے چیف آف آرمی سٹاف سے مطالبہ کی، کہ وہ خود مداخلت کرتے ہوئے قبایل کو امن اور انصاف دلانے کیلئے کردار اداکریں، جمعیت علماء اسلام کے ارکان شوریٰ نے مولانا حامد الحق حقانی کے اعلانات اوراجلاس کے فیصلوں کے تائید کرتے ہوئے امیر مرکزیہ کو مکمل تعاون کا یقین دلایا۔جمعیت کی شوریٰ نے شمالی پنجاب کیلئے صاحبزادہ مولانا عبدالقدوس نقشبندی کو صوبائی امیر اورمولانا محمد ایوب خان کو جنرل سیکرٹری منتخب کیا، جس کی امیر مرکزیہ نے منظوری دئیے ہوئے شمالی پنجاب کیلئے عہدیداروں کا اعلان کیا، اجلاس میں جمعیت علماء اسلام کے مرکزی رہنماؤں مولانا محمد احمد محمودی، مولانا قاری سعیدالرحمن حقانی، مولانا پروفیسر محسن رحمانی، مولانا بختاور خان حقانی، الحاج رحیم اللہ خان کی اہلیہ، مولانا عبدالکریم نعمانی کی اہلیہ، مولانا شیر محمدمغل کے بیٹے اورمولانا محمد اسرائیل کی والدہ کی وفات پراظہار تعزیت کیا اورفاتحہ خوانی کی گئی اورمرحومین کی رفع درجات کیلئے دعا کی گئی۔اجلاس میں بلدیاتی انتخابات کیلئے کارکنوں کو بھرپور تیاری کرنے کی ہدایت کی گئی اوراختیار دیا گیا کہ وہ مقامی سطح پر جس سے انتخابی اتحاد کرنا چاہتے ہیں، مقامی جماعتوں کو مکمل اختیار ہے

مزید : صفحہ اول