وزیربلدیات کی کاغان ڈویلپمنٹ اتھارٹی کو سیاحتی مقامات پر تمام غیر قانونی تعمیر اتی سرگرمیاں بندکرنے کی ہدایت

وزیربلدیات کی کاغان ڈویلپمنٹ اتھارٹی کو سیاحتی مقامات پر تمام غیر قانونی ...

پشاور(سٹاف رپورٹر)صوبائی وزیر بلدیات، الیکشنز و دیہی ترقی شہرام خان ترکئی نے کاغان ڈوپلمنٹ اتھارٹی کو ہدایت کی ہے کہ وہ سیاحتی علاقے میں ہر طرح کی تعمیراتی سرگرمی کی روک تھام کرے اور کسی کو بھی بلااجازت کمرشل سرگرمی نہ کرنے دے۔ فائر بریگیڈ کی گاڑیاں ایمرجنسی اداروں کے حوالے کی جائیں۔صوبے کے تمام سیاحتی مقامات پر صفائی ہر حال میں یقینی بنائی جائے جبکہ وال چاکنگ کرنے والوں سے سختی سے نمٹا جائے۔ صوبائی وزیر بلدیات نے ان خیالات کا اظہار گلیات و کاغان ڈویلپمنٹ اتھارٹیز کے ڈائریکٹر جنرلز کے اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا۔ اجلاس میں ڈویلپمنٹ اتھارٹیز کے ادارتی ڈھانچے، سیاحوں کو سہولیات کی فراہمی، دائرہ اختیار، درپیش مسائل اور مستقبل کے منصوبہ جات کے حوالے سے بریفنگ دی گئی۔ ڈی جی گلیات ڈویلپمنٹ اتھارٹی نے اجلاس کے شرکاء کو بتایا کہ ادارہ سیاحوں کو سہولیات فراہم کرنے کے لیے تمام وسائل بروئے کار لا رہا ہے۔ گلیات میں پارکس، ریسٹ ایریاز اور پبلک ٹوائلٹس کی تعمیر و بحالی کے علاوہ سڑکوں کی تعمیر اور ٹریکس کی مرمت کی جا رہی ہے۔ اس موقع پر صوبائی وزیر بلدیات شہرام خان ترکئی نے کہا کہ سیاحوں کو ان کی سہولت کے لیے کیے جانے والے اقدامات سے باخبر رکھنے کے لیے سوشل میڈیا کو استعمال میں لایا جائے اور جی ڈی اے کے زیر اہتمام ہونے والی تمام سرگرمیاں سوشل میڈیا پر مشتہر کی جائیں۔ اس موقع پر یہ تجویز بھی زیر غور آئی کہ سیاحتی سیزن کے دوران گلیات آنے والے سیاحوں کو پمفلٹ یا کتابچہ کی صورت میں تیار کیا گیا نقشہ تقسیم کیا جائے تاکہ وہ آسانی سے ان سیاحتی مقامات پر جا سکیں اور سیاحت سے لطف اندوز ہوسکیں۔ صوبائی وزیر بلدیات نے حکام پر زور دیا کہ وہ ہر ہفتے سکول اور کالجز کے طلبہ کے ساتھ آگاہی سیشنز کا اہتمام کریں اور انہیں سیاحتی مقامات پر بھی لے کر جائیں۔ شہرام خان ترکئی نے ڈی جی کاغان ڈویلپمنٹ اتھارٹی کو ہدایت کی کہ سیاحتی مقامات پر جاری تمام تعمیراتی سرگرمیاں بند کرائیں اور پہلے سے کی گئی تعمیرات متعلقہ محکمے سے ریگولرائز کی جائیں۔ انہوں نے کہا کہ سیاحتی مقامات پر وال چاکنگ کرنے والوں سے سختی سے نمٹا جائے۔ شہرام خان ترکئی نے ڈویلپمنٹ اتھارٹیز کے حکام کو ہدایت کی کہ وہ اپنے دائرہ اختیار میں آنے والے تمام ہوٹلز، ریسٹ ہاؤسز اور گیسٹ ہاؤسز اور ان میں موجود کمروں کی تعداد معلوم کریں تاکہ ان میں دستیاب سہولیات کی مناسبت سے ان کے کرائے تجویز کیے جا سکیں۔ انہوں نے کہا کہ گندگی کے عدم پھیلاؤ اور صفائی کے لیے تمام ہوٹل مالکان کے ساتھ ایک خاص مقام طے کر لیا جائے جہاں وہ کچرا رکھیں اور کاغان ڈوپلمنٹ اتھارٹی کا عملہ وہ کچرا اٹھا کر محفوظ طریقے سے ٹھکانے لگا سکے

مزید : صفحہ اول