سندھ حکومت کاحال توبہت براہے،سپریم کورٹ کے امل عمر قتل کیس میں ریمارکس

سندھ حکومت کاحال توبہت براہے،سپریم کورٹ کے امل عمر قتل کیس میں ریمارکس
سندھ حکومت کاحال توبہت براہے،سپریم کورٹ کے امل عمر قتل کیس میں ریمارکس

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)سپریم کورٹ آف پاکستان میں امل عمر قتل کیس کی سماعت کے دوران جسٹس گلزار احمد نے سندھ حکومت کی کارکردگی پر عدم اعتماد کا اظہار کرتے ہوئے ریمارکس دیئے ہیں کہ سندھ حکومت کاحال توبہت براہے،افسوس کےساتھ کہہ رہا ہوں کراچی پاکستان کابدترین شہربن چکاہے،کراچی شہرمیں کوئی حکومت نہیں،پہلے ہم گھر سے دورجاکر کھیلتے تھے،آج کراچی میں ہمارے بچے گھر سے نکل بھی نہیں سکتے۔

تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ آف پاکستان میں امل عمرقتل کیس کی سماعت ہوئی،جسٹس گلزاراحمد کی سربراہی میں 3رکنی بنچ نے کیس کی سماعت کی،وکیل والدین امل عمر نے کہا کہ رپورٹ میں پولیس،ریگولیٹراور ہسپتال پرذمے داری کاتعین ہوناتھا،رپورٹ پرعمل کرتے ہوئے سندھ پولیس کوپٹرولنگ میں بھاری اسلحہ کے استعمال سے روک دیاگیاہے،پولیس نے رپورٹ میں غلطی کوتسلیم کیاہے۔

جسٹس گلزار احمد نے کہاکہ اس کیس کازیادہ پس منظر نہیں جانتے،غلطی مانناتوٹھیک لیکن کیااسلحہ کے استعمال سے روکنا کراچی جیسے شہرمیں ٹھیک ہوگا،کیاحالات کے مدنظرکراچی میں اسلحے کے استعمال سے پولیس کوروکاجاسکتاہے،وکیل امل والدین نے کہا کہ دنیاکے کئی ممالک میں پٹرولنگ پولیس کومشین گنزجیسااسلحہ نہیں دیاجاتا۔

دوران سماعت سپریم کورٹ کاسندھ حکومت کی کارکردگی پرعدم اعتمادکااظہارکیا،وکیل سندھ حکومت نے کہا کہ عدالت کے سامنے اہم ایشوپر اپنا موقف دیناچاہتاہوں،جسٹس گلزاراحمد نے کہا کہ سندھ حکومت کے پاس توکسی مسئلے کاحل نہیں ہوتاآپ بات مت کریں،سندھ حکومت کاحال توبہت براہے،جسٹس گلزار احمد نے کہا کہ افسوس کےساتھ کہہ رہا ہوں کراچی پاکستان کابدترین شہربن چکاہے،کراچی شہرمیں کوئی حکومت نہیں، پہلے ہم گھر سے دورجاکر کھیلتے تھے،آج کراچی میں ہمارے بچے گھر سے نکل بھی نہیں سکتے،جسٹس گلزاراحمد نے کہا کہ کل کراچی میں دن دہاڑے ڈکیتی کی گئی،یہ مفرورسنجیدہ نوعیت کے جرائم میں ملوث ہیں۔

مزید : قومی /علاقائی /سندھ /کراچی