تنخواہوں میں کٹوتی کی تجویز مسترد، عوام کو ریلیف دنے والا صوبائی بجٹ پیش کرینگے: عثمان بزدار

  تنخواہوں میں کٹوتی کی تجویز مسترد، عوام کو ریلیف دنے والا صوبائی بجٹ پیش ...

  

لاہور(جنرل رپورٹر)وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار نے سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں کٹوتی کی تجویز مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ سرکاری ملازمین کو ریلیف دینے کے حق میں ہیں۔وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار کی زیرصدارت اجلاس میں بجٹ 2020-21 کی تیاریوں کا جائزہ لیا گیا اور مختلف تجاویز اور سفارشات پر غورکیا گیا۔ وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے ہدایت کی کہ صوبائی بجٹ میں سبسڈی کلچر کی حوصلہ شکنی کی جائے اور سرکاری محکموں میں غیر ضروری اخراجات کا سلسلہ قطعی طور پر بند کیا جائے۔میسر انسانی وسائل کا بہترین استعمال کرکے کمی کو پورا کیا جائے اور موثر انتظامی اقدامات کے ذریعے کم از کم انسانی وسائل کے ذریعے زیادہ سے زیادہ نتائج حاصل کئے جائیں۔ پی او ایل اور دیگر مدات میں کفایت سے سرکاری وسائل میں بچت کی جائے۔ محصولات میں اضافے کیلئے تمام تر ممکنہ اقدامات کئے جائیں۔ انہوں نے کہا کہ بجٹ کو عوامی توقعات کے مطابق بہترین بنا کر پیش کیا جائے۔دریں اثناء وزیراعلیٰ پنجاب سردارعثمان بزدار سے صوبائی وزیر قانون محمد بشارت راجہ نے ملاقات کی۔ ملاقات میں پنجاب اسمبلی کے بجٹ سیشن کو بطریق احسن چلانے کے حوالے سے بات چیت ہوئی۔بجٹ سیشن کے دوران اراکین صوبائی اسمبلی کوکورونا سے بچانے کے حوالے سے کیے گئے حفاظتی اقدامات پر بھی تبادلہ خیال کیاگیا۔وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے احتیاطی تدابیر کو مزیدموثر بنانے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ اراکین اسمبلی کے تحفظ کیلئے پنجاب اسمبلی کے بجائے مقامی ہوٹل میں بجٹ سیشن ہورہاہے۔کورونا کی وباء نے ہر طبقے کو متاثر کیاہے۔بجٹ میں کمزورطبقے کے تحفظ کے لئے اقدامات تجویز کیے جائیں گے۔انہوں نے کہا کہ عام آدمی کو ریلیف دینے کیلئے جامع منصوبہ بندی کرلی گئی ہے۔اگلے مالی سال کے بجٹ میں ہرطبقے کا خیال رکھاجائے گا۔کورونا کی وجہ سے سرکاری محاصل کی وصولی میں کمی ہوئی۔ انہوں نے کہا کہ عام آدمی کی معاشی مشکلات کا ازالہ ہماری پہلی ترجیح ہے۔مشکل ترین حالات میں بھی عوام کو ریلیف دینے والا بجٹ پیش کرنے کیساتھ ساتھ غیر ضروری اخراجات کم کریں گے۔

سردار عثمان بزدار

مزید :

صفحہ اول -