تاجروں نے وفاقی بجٹ کو تاجردشمن قراردیکرمستردکردیا

تاجروں نے وفاقی بجٹ کو تاجردشمن قراردیکرمستردکردیا

  

پشاور(سٹی رپورٹر)پشاورکے تاجروں نے وفاقی بجٹ کوتاجردشمن بجٹ قراردیتے ہوئے اسے یکسرمتردکردیااوروزیراعظم عمران خان سے مطالبہ کرتے ہوئے کہاکہ وہ فوری طورپراس بجت پرنظرثانی کریں اورعوام اورتاجردوست بجٹ پیش کیاجائے انہوں نے خبردارکیاکہ اگرحکومت نے فوری طورپربجت پرنظرثانی نہیں کیاتووہ احتجاج کانہ رکنے والاسلسلہ شروع کردیں گے اس ضمن میں گزشتہ روزتاجراتحادخیبرپختونخواکے صدرمجیب الرحمن کی صدارت میں اجلاس ہواجس میں پشاوربھرکے تاجروں نے شرکت کی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے مجیب الرحمن نے کہاکہ حکومت نے حسب معمول تاجروں کے ساتھ وعدہ خلافی کی ہے بجت سے قبل تاجروں کوجس ریلیف کی یقین دہانی کرائی گئی تھی بجٹ میں وہ ریلیف دوردورتک کدھربھی نظرنہیں آرہاہے انکامزیدکہناتھاکہ وفاقی بجٹ محض لفظوں کاہیرپھیرہے اوریہ کہ شناختی کارڈکی شرط کوبھی یکسرمستردکرتے ہیں انہوں نے کہاکہ بجٹ تاجروں اوربالخصوص عوام کامعاشی قتل ہے اوریہ کہ کوروناوائرس اورلاک ڈاؤن سے متاثرہ تاجروں کی اس بجٹ سے جتنی امیدیں وابستہ تھیں وہ سب دم توڑگئی ہیں اورتاجروں میں شدیدمایوسی پھیل گئی ہے لہذاحکومت اس بجٹ پرنظرثانی کرے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -