مقبوضہ کشمیر، پانچ حرسویت پسندوں کوٹارچر سیلز میں شہید کیا گیا، لاشیں دریا برد

مقبوضہ کشمیر، پانچ حرسویت پسندوں کوٹارچر سیلز میں شہید کیا گیا، لاشیں دریا ...

  

اسلام آباد(آئی این پی) انسانی حقوق کی عالمی تنظیم ایمنسٹی انٹرنیشنل نے انکشاف کیا کہ مقبوضہ کشمیر میں بھارتی قابض فوج نے جگہ جگہ زیر زمین ٹارچر سیل بنا رکھے ہیں جہاں حریت پسند کشمیری نوجوانوں کو گھروں سے اغوا کر کے لیجایا جاتا ہے اور وہاں تشدد کا نشانہ بنایا جاتا ہے،اس کے بعد ان نوجوانوں کو قتل کر کے بیدردی کے ساتھ ان کی نعشیں دریا برد کر دی جاتی ہیں،لواحقین اپنے پیاروں کو سپرد خاک کرنے کیلئے لاشیں حوالے کرنے کا کہتے ہیں جبکہ بھارتی قابض فوج کی جانب سے ان لاشوں کو دفنانے کی بجائے دریاؤں میں پھینک دیا جاتا ہے، جس پر ایمنسٹی انٹرنیشنل نے تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ایک ایسے ٹارچر سیل کو سامنے لایا گیا ہے جس میں سے 2سو سے زائد کشمیری لڑکیاں برآمد ہوئی ہیں۔ 5سو سے زائد نوجوان لڑکوں کی لاشیں بھی ملی ہیں جنہیں دریا برد کیا گیا۔ ایمنسٹی انٹرنیشنل کی رپورٹ کے مطابق یکم جون سے اب تک 30سے زائد کشمیری نوجوانوں کو جعلی مقابلوں میں بھارتی افواج شہید کرچکی ہے جبکہ 60سے زائد مکانات، دکانیں، ہینڈ گرنیڈ سے تباہ کرچکے ہیں،مودی نے مذہبی انتشار کو ہوا دینے کیلئے آ ر ایس ایس کے غنڈوں کو برملا سرکاری طور پر یہ اعلان کردیا ہے کہ مسلمانوں کی جہاں مساجدیں اور مدارس موجود ہیں اُن کو فوری طور پر مسمار کیا جائے کیونکہ ان میں دہشت گرد تیار ہورہے ہیں۔ایمنسٹی انٹرنیشنل نے ایک بار پھر اقوام متحدہ سمیت دیگر اداروں کو رپورٹ جاری کرتے ہوئے کہا کہ اگر بھارتی فوج کو جنگی جنون سے روکا نہ گیا تو وادی سمیت بھارت کے دیگر صوبوں میں مسلمانوں کی بڑی تعداد میں قتل و غارت شروع ہوجائے گی جو انسانی حقوق کی پامالی ہے اور اُس کو روکنے کیلئے فوری اقدامات ضروری ہیں۔

ایمنسٹی انٹر نیشنل

مزید :

پشاورصفحہ آخر -