حکومتی تنبیہ کے باوجود آسٹریلیا میں ہزاروں افراد گھروں سے کیوں نکلے؟

حکومتی تنبیہ کے باوجود آسٹریلیا میں ہزاروں افراد گھروں سے کیوں نکلے؟
حکومتی تنبیہ کے باوجود آسٹریلیا میں ہزاروں افراد گھروں سے کیوں نکلے؟

  

پرتھ(ڈیلی پاکستان آن لائن)آسٹریلیا میں نسل پرستی کے خلاف مظاہرہ کرنے والوں نے حکومتی اپیل مسترد کردی۔مختلف شہروں میں ہزاروں افراد نسل پرستی کے خلاف سڑکوں پر نکلے اور سیاہ فام افراد سے یکجہتی کا اظہارکیا۔

رائٹرز کے مطابق آسٹریلیا میں حکام کی طرف سے تنبیہہ کے باوجود ’بلیک لائیوز مَیٹر‘کے نام سے ہفتے کوہونے والے مظاہروں میں ہزاروں افرادنےشرکت کی۔

زیادہ تر مظاہرین نے چہروں پر ماسک پہنے ہوئے تھے اورسماجی فاصلوں سےمتعلق قوانین کابھی احترام کرتے دکھائی دئیے۔

اس موقع پر پولیس کی بھاری نفری تعینات تھی جبکہ زیادہ تر ریلیاں پر امن رہیں اور کسی قسم کا تصادم دیکھنے کونہیں ملا۔

یہ احتجاجی ریلیاں کئی آسٹریلوی شہروں میں نکالی گئیں۔

افریقی نژاد امریکی شہری جارج فلوئڈ کی امریکی پولیس اہلکاروں کے ہاتھوں 25مئی کو ہلاکت کے بعد سے دنیا بھر میں نسل پرستی اور پولیس کی ظالمانہ کارروائیوں کے خلاف احتجاج جاری ہے۔

مزید :

بین الاقوامی -