بھارت اور چین کے درمیان ایل اے سی پر کشیدگی تو دوسری طرف چینی ا فواج نے کیا کام کردکھایا؟ سٹیلائیٹ تصاویر نے حریف ممالک کی نیندیں اڑادیں

بھارت اور چین کے درمیان ایل اے سی پر کشیدگی تو دوسری طرف چینی ا فواج نے کیا ...
بھارت اور چین کے درمیان ایل اے سی پر کشیدگی تو دوسری طرف چینی ا فواج نے کیا کام کردکھایا؟ سٹیلائیٹ تصاویر نے حریف ممالک کی نیندیں اڑادیں

  

بیجنگ(مانیٹرنگ ڈیسک)ایک طرف کورونا کا ہنگامہ جاری ہے اور دوسری طرف چینی فوج کے متعلق ایک ایسی خبر آ گئی ہے کہ سن کر چین کے حریف ممالک کی نیندیں اڑ جائیں گی۔ فوربز کے مطابق سیٹلائٹ سے حاصل کی گئی حالیہ تصاویر میں چینی نیوی کے متعلق انکشاف ہوا ہے کہ وہ اپنے اوورسیز اڈوں کو تیزی کے وسیع کر رہی ہے اور بحر ہند اور مشرق وسطیٰ میں اس کی سرگرمیاں بہت تیز ہو گئی ہیں۔ جبوتی میں بھی چینی نیوی اپنے اڈے میں توسیع کر رہی ہے جو کہ مشرقی افریقہ کا ایک ملک ہے۔سیٹلائٹ امیجز سے معلوم ہوا ہے کہ چینی نیوی جبوتی میں اپنی فورٹیفائیڈ سپورٹ بیس پر تیزی سے کام جاری رکھے ہوئے ہے۔ایک طرف بھارت اور چین کے درمیان ایل اے سی (لائن آف ایکچوئل کنٹرول)پر کشیدگی جاری ہے، دونوں ملکوں کی فوجوں میں جھڑپیں ہو رہی ہیں اور جنگی سازوسامان اکٹھا کیا جا رہا ہے لیکن بھارت کے لیے چین ایل اے سی سے بڑھ کر بحرہند میں بڑا خطرہ بننے جا رہا ہے جہاں چینی فوج اپنی موجودگی بڑھا رہی ہے۔

تصاویر سے پتا چلتا ہے کہ جبوتی میں چینی نیوی کا اڈا اب تکمیل کے قریب پہنچ چکا ہے اور بہت جلد یہاں جہاز لنگرانداز ہو سکیں گے۔ اوپن سورس انٹیلی جنس اینالسٹ ڈیٹریسفا نے اپنے ٹوئٹر اکاﺅنٹ پر رواں سال مارچ کی سیٹلائٹ سے حاصل کردہ ایک تصویر پوسٹ کی ہے، جس میں دیکھا جا سکتا ہے کہ اڈے پر اضافی حاصل کردہ زمین پر کھدائی کرنے والی ایک مشین کام کر رہی ہوتی ہے۔ ڈیٹریسفا نے بتایا ہے کہ اڈے میں اس قدر توسیع سے اس کی گنجائش میں بہت زیادہ اضافہ ہو جائے گا۔ واضح رہے کہ یہ چین کا پہلا غیرملکی اڈا تھا جو 2017ءمیں کھولا گیا تھا، تاہم وہاں تعمیراتی کام تاحال جاری ہے، اس میں توسیع کی جا رہی ہے اور اسے جدید تر بنایا جا رہا ہے۔

مزید :

بین الاقوامی -