کورونا وائرس، مریضوں کا ہاتھ چوم کر علاج کرنیوالا خودساختہ بابا خود ہی موذی مرض کا شکار ہوکر دنیا سے ہی چل بسا

کورونا وائرس، مریضوں کا ہاتھ چوم کر علاج کرنیوالا خودساختہ بابا خود ہی موذی ...
کورونا وائرس، مریضوں کا ہاتھ چوم کر علاج کرنیوالا خودساختہ بابا خود ہی موذی مرض کا شکار ہوکر دنیا سے ہی چل بسا

  

نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک) بھارت میں لوگوں کے ہاتھ چوم کر کورونا وائرس کا علاج کرنے والا خودساختہ بابا موذی وباءکا شکار ہو کر خود ہی دنیا سے چل بسا۔ دی پرنٹ کے مطابق ریاست مدھیاپردیش کے شہر رتلام کے رہائشی اس بابے کا نام ’اسلم ‘ تھے جسے اس کے مریدین ’اسلم بابا‘ کے نام سے پکارا کرتے تھے۔کورونا وائرس کی وباءکے ان مہینوں میں اس کی ویڈیوز سوشل میڈیا پر وائرل ہوتی رہیں جن میں وہ اپنے مریدوں کے ہاتھ چوم رہا ہوتا تھا۔ اس کا دعویٰ تھا کہ اس طرح ہاتھ چوم کر وہ کورونا وائرس کا علاج کر سکتا ہے۔

رپورٹ کے مطابق بالآخر 3جون کو خود اسلم بابا میں ہی کورونا وائرس کی تصدیق ہو گئی اور اگلے روز اس کی موت واقع ہو گئی۔ رتلام کے سپرنٹنڈنٹ آف پولیس گورو تیواری کا کہنا تھا کہ ”اسلم بابا کو ہاتھ چومنے سے کورونا وائرس لاحق ہوا اور اس نے لوگوں کے ہاتھ چوم چوم کر آگے 50سے زائد لوگوں کو وائرس منتقل کیا۔ اسلم بابا کی موت کے بعد اس کے سینکڑوں مریدوں کو قرنطینہ میں بھیج دیا گیا ہے اور ان کی سکریننگ کی جا رہی ہے۔اس علاقے میں ہم نے ایسے ہی 32بابوں کو قرنطینہ میں رکھا ہوا ہے“رپورٹ کے مطابق جب اسلم بابا میں کورونا وائرس کی تصدیق ہوئی تو مقامی حکام لاک ڈاﺅن اور سماجی فاصلے کی پابندی کی خلاف ورزی کرنے کے جرم میں اس کے خلاف مقدمہ درج کرنے کی تیاری کر رہے تھے کہ اگلے ہی روز اس کی موت واقع ہو گئی ۔

مزید :

بین الاقوامی -کورونا وائرس -