مریضہ کے ساتھ ہسپتال سٹاف کی اجتماعی زیادتی

مریضہ کے ساتھ ہسپتال سٹاف کی اجتماعی زیادتی
مریضہ کے ساتھ ہسپتال سٹاف کی اجتماعی زیادتی

  

لکھنؤ (ڈیلی پاکستان آن لائن) بھارتی ریاست اتر پردیش کے دارالحکومت لکھنؤ میں ایک خاتون مریضہ کے ساتھ اجتماعی زیادتی کا واقعہ سامنے آیا ہے۔

بھارتی ٹی وی نیوز 18 کے مطابق 40 سالہ خاتون کو لکھنؤ کے ڈاکٹر رام منوہر لوہیا اسنٹی ٹیوٹ میں داخل کرایا گیا جہاں دو روز تک خاتون کو ایک ایسے کمرے میں رکھا گیا جہاں اس کے اہل  خانہ کو جانے کی اجازت نہیں تھی۔ دو روز بعد جب اہل خانہ ملے تو یہ دیکھ کر حیران رہ گئے کہ خاتون کی حالت انتہائی نازک ہوچکی تھی۔ مریضہ نے بتایا کہ ہسپتال سٹاف نے اس کے ساتھ اجتماعی زیادتی کی ہے اور اس کے ساتھ مار پیٹ کرتے رہے ہیں۔

اہل خانہ جب مریضہ کی بات سن کر تھانے پہنچے تو پولیس اہلکاروں نے انہیں بھگادیا جس کے بعد ہسپتال کے عملے نے بیہوشی کی حالت میں مریضہ کی ہسپتال سے چھٹی کردی۔

یہ معاملہ اس وقت اعلیٰ حکام کی نظروں میں آیا جب بھارتیہ جنتا پارٹی کی رہنما سمرتی ایرانی نے اچانک ہسپتال کا دورہ کیا۔ اس دوران متاثرہ خاتون کی بیٹی نے سمرتی ایرانی کو ساری صورتحال بتائی جس پر انہوں نے متعلقہ حکام کو فوری ایکشن لینے کا حکم دے دیا۔

مزید :

جرم و انصاف -