وفاقی بجٹ حکومت نہیں   آئی ایم ایف کا ہے،ضیاء الدین

وفاقی بجٹ حکومت نہیں   آئی ایم ایف کا ہے،ضیاء الدین

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

لاہور (پ ر)امیر جماعت اسلامی لاہور ضیاء  الدین انصاری ایڈووکیٹ نے کہا ہے کہ وفاقی بجٹ حکومت نہیں بلکہ آئی ایم ایف نے بنایا  جسے حکومت نے پیش کیا۔ وفاقی او رصوبائی بجٹ میں عوام کو ریلیف دینے کیلئے کوئی پلان موجودنہیں ہیں۔ 24 ویں آئی ایم ایف پروگرام بجٹ میں عام آدمی کیلئے ریلیف کی بجائے مزید مشکلات ہوں گی۔آئی ایم ایف پروگرام کی موجودگی اور شرائط میں ایسا بجٹ پیش ہوہی نہیں سکتا جس عوام کی فلاح بہبود شامل ہو۔ان خیالا ت کا اظہار انہوں وفاقی و بجٹ کے حوالے سے میڈیا کے نمائندگان سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

 ضیاء_  الدین انصاری ایڈووکیٹ نے مزید کہا کہ آئی ایم ایف کی شرائط کے تحت جنرل سیلز ٹیکس کی شرح میں اضافہ ہو گاجس کا مطلب ہے کہ اکثریت میں چیزیں زیادہ مہنگی ہوں گی۔انرجی سیکٹر میں بجلی و گیس کے بل مزید بڑھ جائیں گے جو مہنگائی کی پسی عوام کیلئے کسی عذاب سیکم نہیں ہوں گے۔انہوں نے کہا کہ آئی ایم ایف چاہتا ہے کہ پاکستان سخت مالیاتی اور زرعی پالیسیوں کا عملدرآمد کرے اور انرجی کے شعبے میں بروقت ٹیرف ایڈجسمنٹ یعنی نرخ بڑھائے۔بجٹ عوام کی فلاح بہبود کیلئے نہیں بلکہ مزید قرضوں کے حصول کیلئے عام آدمی کی قربانی دینے کیلئے پیش ہوگاجو ناقابل قبول ہے۔ امیر لاہور نے کہا کہ جماعت اسلامی عید قربان کے بعد امیر جماعت اسلامی پاکستان حافظ نعیم الرحمن کی قیادت میں مہنگائی کی پسی عوام کو منظم کرنے کیلئے احتجاجی تحریک شروع کریگی جس میں حکومت کو مجبور کیا جائے گا کہ عوام کو ریلیف فراہم کرے۔