بجٹ، مہنگائی شرح میں بڑے پیمانے پر اضافے کا امکان: ذرائع 

  بجٹ، مہنگائی شرح میں بڑے پیمانے پر اضافے کا امکان: ذرائع 

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

ملتان(نیوزرپورٹر) ایوان تجارت و صنعت ملتان نے وفاقی بجٹ 2024-25 کو سخت قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ ملک میں مہنگائی کی شرح میں اضافہ اور شہریوں کی مشکلات بڑھ جائیں گی۔ گزشتہ روز ملتان چیمبر آف کامرس میں بجٹ تقریر کے بعد رد عمل کا اظہا(بقیہ نمبر24صفحہ7پر)

ر کیا گیا۔ایوان تجارت و صنعت ملتان کے صدر میاں راشد اقبال، سینیئر نائب صدر ندیم احمد شیخ،نائب صدر شیخ عاصم سعید،سابق صدر خواجہ محمد حسین،خواجہ محمد عثمان، سہیل طفیل،خواجہ محمد فاروق،شیخ فیصل سعید، نوید اقبال چغتائی،سید افتخار شاہ و دیگر نے میڈیا سے بات چیت کرتے کہا کہ بجٹ میں اچھی باتوں کا ذکر کیا گیا ہے اور سخت فیصلہ کو چھپایا گیا ہے۔ اب یہ اعتراف کیا گیا ہے کہ حکومت کا سائز بڑا ہے اور اس کو چھوٹا کیا جائے گا مگر اس بات کا ذکر نہیں کیا گیا کہ کن وزارتوں اور محکموں کو ختم کیا جائے گا۔انہوں نے کہا کہ پراپرٹی پر ٹیکس کی شرح میں اضافہ سے اس سیکٹر پر دبا بہت زیادہ بڑھ جائے گا اور اراضی/جائیدادوں کی خرید و فروخت میں بھی نمایاں کمی واقع ہوگی.حالیہ بجٹ کے بعد ملک میں مہنگائی کی شرح میں 5 سے 15 فیصد کا اضافہ متوقع ہے جس سے کم آمدنی والا طبقہ پس جائے گا۔انہوں نے کہا کہ حکومتی بجٹ کے بعد ادویات، بچوں کی خوراک، سٹیشنری سمیت متعدد اشیا مہنگی ہو جائیں گی۔ملک میں بجلی اور گیس کی قیمتوں میں بھی اضافہ متوقع ہے جس سے صورتحال اور زیادہ سنگین ہو جائے گی۔نئے وفاقی بجٹ میں انکم ٹیکس سلیب میں بھی چھیڑ چھاڑ کی گئی ہے۔ سرکاری ملازمین کی تنخواہوں اور پینشن میں اضافہ خوش آئند ہے تاہم پرائیویٹ سیکٹر اس پوزیشن میں نہیں کہ 37 ہزار روپے ماہوار تنخواہ ادا کر سکے۔ انہوں نے کہا کہ کراچی میں آئی ٹی پارک کے قیام کا اعلان کیا گیا ہے حکومت کو چاہیے کہ ملتان سمیت تمام ڈویژنل ہیڈ کوارٹرز پر آئی ٹی پارک قائم کیا جائے۔نئے وفاقی بجٹ میں گاڑی کے انجن کی بجائے اس کی ویلیو پر ٹیکس عائد ہونے سے شہریوں پر بوجھ بڑھ جائے گا۔ بجٹ میں ٹیکسٹائل اور لیدر سیکٹر پر ٹیکس لگانے سے بھی نئے مسائل جنم لیں گے۔