تھائی لینڈ کا انوکھامیلہ جہاں آنے والےسیاحوں کے جسم پر' جادوئی ٹیٹو'بنائے جاتے ہیں

تھائی لینڈ کا انوکھامیلہ جہاں آنے والےسیاحوں کے جسم پر' جادوئی ٹیٹو'بنائے ...
تھائی لینڈ کا انوکھامیلہ جہاں آنے والےسیاحوں کے جسم پر' جادوئی ٹیٹو'بنائے جاتے ہیں

  

بنکاک (نیوز ڈیسک) مغربی معاشرے میں جسم پر نقش و نگار یعنی ٹیٹو بنانے کا رواج بہت عام پایا جاتا ہے لیکن اگربات جادوئی ٹیٹو کی ہو تو اس کا مرکز تھائی لینڈ میں ہے جہاں ہر سال ہزاروں افراد جمع ہوکر اپنے جسموں پر دنیا کے پیچیدہ ترین ٹیٹو بنواتے ہیں۔

مزید پڑھیں:خوبرو حسیناؤں کو اپنے ہتھیا ر دینا پولیس اہلکار کو بہت مہنگا پڑا

 تھائی دارالحکومت سے 30 منٹ کی مسافت پر وات بانگفرا بدھ مندر ہے جہاں رہنے والے بدھ راہب جادوئی ٹیٹو بنانے اور ان کے ذریعے لوگوں کی قسمت بدلنے کی شہرت رکھتے ہیں۔ یہاں آنے والے لوگوں کا ماننا ہے کہ ”ساک یانتس“ کہلانے والے یہ ٹیٹو جادوئی طاقتوں کے حامل ہیں، یہ نحوست دور کرتے ہیں اور آفات و بلیات سے محفوظ رکھتے ہیں۔ اس مندر کے جادوئی ٹیٹوز کی بنیاد بڑے راہب لووانگ پور پرن نے رکھی اور اب یہاں ہر سال مارچ کے پہلے ہفتے ہزاروں لوگ دنیا کے ہر کونے سے جمع ہوتے ہیں۔ یہاں موجود بھکشو ان افراد کے جسموں پر سانپ کے زہر، نایاب جڑی بوٹیوں اور سگریٹ کی راکھ سے بنائی گئی سیاہی استعمال کرتے ہوئے بانس کی نوکیلی ڈنڈیوں کے ساتھ ٹیٹوز بناتے ہیں۔ ٹیٹو کے جادوئی فنکشن کو آن کرنے کے لئے مندر کا سب سے بڑا پروہت اس پر پھونک مارتا ہے اور خصوصی دعا کرتا ہے۔ اس مندر میں آنے والوں کا کہنا ہے کہ پروہت کی پھونک کے بعد انہیں واقعی ایسا محسوس ہوتا ہے کہ گویا ان کے جسم میں نئی زندگی کی لہر دوڑ گئی ہو۔

مزید : ڈیلی بائیٹس