خدمات کے شعبہ کی برآمدات میں 16.24فیصداضا فہ ریکارڈ

خدمات کے شعبہ کی برآمدات میں 16.24فیصداضا فہ ریکارڈ

 اسلام آباد (اے پی پی) رواں مالی سال 2014-15ء کی پہلی ششماہی کے دوران گزشتہ مالی سال کے مقابلہ میں خدمات کے شعبہ کی برآمدات میں 16.24فیصد کا اضافہ ہوا ہے ۔ ادارہ برائے شماریات پاکستان (پی بی ایس) کے اعداد و شمار کے مطابق جولائی تا دسمبر 2014-15ء کے دوران خدمات کے شعبہ کی برآمدات کا حجم 2ارب 82کروڑ 20لاکھ ڈالر تک بڑھ گیا جبکہ گزشتہ مالی سال 2013-14ء کے اسی عرصہ کے دوران خدمات کے شعبہ کی برآمدات سے 2ارب 42کروڑ 70لاکھ ڈالر کا زرمبادلہ کمایا گیا تھا۔ رپورٹ کے مطابق نومبر 2014ء میں شعبہ کی برآمدات میں کمی واقع ہوئی تاہم دسمبر 2014ء کے دوران برآمدات میں گزشتہ مالی سال کے اسی ماہ کے مقابلہ میں 2.44فیصد کا اضافہ ریکارڈ کیا گیا ہے ۔ ملک کے اقتصادی ترقی میں خدمات کے شعبہ کا کردار انتہائی کلیدی ہے اور مالی سال 2005-06ء تک ملک کی مجموعی قومی پیداوار (جی ڈی پی) میں خدمات کے شعبہ کا حصہ 56فیصد تھا جو گزشتہ سال 2013-14ء کے اختتام پر بڑھ کر 57.7فیصد تک پہنچ گیا ۔ خدمات کے شعبہ کے ذیلی شعبوں میں مالیات اور انشورنس ، ٹرانسپورٹ اور سٹوریج ، ہول سیل ریٹیل ، پبلک ایڈمنسٹریشن اوردفاع وغیرہ شامل ہیں۔ شعبہ کے ماہرین نے کہا ہے کہ گزشتہ چند سال کے دوران پاکستان کی جانب سے بینکنگ ، انشورنس ، ٹیل کیمونیکیشن ، ریٹیلز سمیت دیگر مختلف شعبوں میں غیر ملکی کمپنیوں کو کام کرنے کی اجازت دینے کے نتیجے میں شعبہ کی ترقی میں بڑی معاونت ملی ہے ۔ پی بی ایس کی رپورٹ کے مطابق گزشتہ مالی سال 2013-14ء کے مقابلہ میں رواں مالی سال 2014-15ء کے ابتدائی چھ ماہ کے دوران خدمات کے شعبہ کی درآمدات میں 2.09فیصد کا اضافہ ریکارڈ کیاگیا ہے اورشعبہ کی درآمدات گزشتہ مالی سال کے پہلے چھ ماہ کی درآمدات 3ارب 93کروڈ ڈالر سے بڑھ کر 4ارب ایک کروڑ70لاکھ ڈالر تک بڑھ گئیں اور گزشتہ مالی سال کے ماہ دسمبر کے مقابلہ میں رواں مالی سال میں دسمبر 2014ء کے دوران شعبہ کی درآمدات میں 1.77فیصد کا اضافہ ریکارڈ کیا گیا ہے۔ گزشتہ مالی سال 2013-14ء کے دوران خدمات کے شعبہ کی مجموعی درآمدات میں 4.99فیصد کی کمی واقع ہوئی تھی اور درآمدات کا حجم مالی سال 2012-13ء کی درآمدات 8.205ارب ڈالر سے کم ہو کر 7.795ارب ڈالر ہوگیا۔ خدمات کے شعبہ کی برآمدات میں نمایاں اضافہ کے باعث شعبہ کے تجارتی خسارے میں 20.70فیصد کی کمی ہوئی ہے اور شعبہ کا تجارتی خسارہ 1.194ارب ڈالر تک کم ہو گیا۔

مزید : کامرس