این اے66 الیکشن ٹربیونل نے لیگی رکن قومی اسمبلی حامد حمید کو نااہل قرار دیدیا

این اے66 الیکشن ٹربیونل نے لیگی رکن قومی اسمبلی حامد حمید کو نااہل قرار دیدیا

 سرگودھا(بیورورپورٹ) الیکشن ٹربیونل راولپنڈی کے جج عوامق جاوید نے بطور چیئر مین الیکشن ٹربیونل فیصل آباد سماعت کرتے ہوئے شہر کے حلقہ این اے 66 سے پی ٹی آئی کے امیدوار عبداﷲ ممتاز کاہلوں کی درخواست منظور کرتے ہوئے مسلم لیگ (ن) کے رکن اسمبلی چوہدری حامد حمید کو اسمبلی کی نشست کے عہدہ سے نا اہل قرار دے کر حلقہ میں دوبارہ انتخابات کرانے کے احکامات جاری کر دیئے ہیں‘ بیرسٹر عبداﷲ ممتاز کاہلوں نے محبوب سیال ایڈووکیٹ کے ذریعے الیکشن ٹربیونل فیصل آباد میں درخواست دائر کرتے ہوئے مؤقف اختیار کیا تھا کہ ایم این اے چوہدری حامد حمید نے انتخابات لڑنے کے لئے جو کاغذات نامزدگی جمع کرائے تھے ان میں اپنے پپلاں اور دیگر علاقہ جات میں موجود کروڑوں روپے کے اثاثہ جات ظاہر نہیں کیے، اس طرح موصوف نے ریٹرننگ آفیسر/ عدالت کو دھوکہ میں رکھ کر غلط بیانی اور جھوٹ سے کام لیا اس طرح موصوف نے قانون کی شک 62/63 سے بھی انحراف کیا ہے۔ کچھ عرصہ تک اس درخواست کی سماعت الیکشن ٹربیونل کے جج محبوب سرفراز کی عدالت میں ہوتی رہی بعد ازاں یہ درخواست سماعت کیلئے الیکشن ٹربیونل راولپنڈی کے جج عوامق جاوید کی عدالت کو سپرد ہوئی‘ گزشتہ روز دورہ فیصل آباد کے دوران اس درخواست کی سماعت کرتے ہوئے الیکشن ٹربیونل کے جج عوامق جاوید نے چوہدری حامد حمید کو نا اہل قرار د یدیا اور حکم دیا کہ اس حلقہ میں دوبارہ انتخابات کرائے جائیں جونہی چوہدری حامد حمید کی نا اہلی کی خبر شہر میں پھیلی تو مسلم لیگی حلقوں میں سخت مایوسی پھیل گئی جب کہ پی ٹی آئی والوں میں خوشی کی لہر دوڑ گئی، درخواست گزار جو کہ خود تو اس وقت انگلینڈ میں ہیں اور ان کے والد حاجی ممتاز اختر کاہلوں عمرہ کی ادائیگی کے سلسلہ میں سعودی عرب گئے ہوئے ہیں کی رہائشگاہ پر کارکنوں نے مٹھائیاں تقسیم کیں اور بھنگڑے ڈالے۔ رابطے پر مسلم لیگ (ن) کے چوہدری حامد حمید نے بتایا کہ ماتحت عدالت کے حکم کو منسوخ کرانے کیلئے وہ آج عدالت عالیہ سے رجوع کریں گے۔

مزید : صفحہ آخر