جنوری سے نائن زیروآپریشن کی تیاری تھی ،نوازشریف اور زرداری میں رابطہ، سینٹ الیکشن کیلئے کارروائی موخر رکھی گئی: رپورٹ

جنوری سے نائن زیروآپریشن کی تیاری تھی ،نوازشریف اور زرداری میں رابطہ، سینٹ ...
جنوری سے نائن زیروآپریشن کی تیاری تھی ،نوازشریف اور زرداری میں رابطہ، سینٹ الیکشن کیلئے کارروائی موخر رکھی گئی: رپورٹ

  


اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) متحدہ قومی موومنٹ کے ہیڈکوارٹرنائن زیرو اور ملحقہ دفاتر میں رینجرز کی کارروائی انٹیلی جنس معلومات کی جامع رپورٹ کے بعد کی گئی جس کا اصولی فیصلہ سینٹ الیکشن سے قبل ہی کرلیاگیاتھااور وزیراعظم نواز شریف نے آصف علی زرداری کو بھی اعتمادمیں لے لیا تھا اور آصف علی زرداری نے سندھ حکومت کو رینجرز کے ساتھ مکمل تعاون کی ہدایت کردی تھی ۔

رینجرز کے نائن زیرو پر چھاپے کی مکمل خبر پڑھنے کیلئے یہاں کلک کریں ۔

ذرائع کے مطابق وزارت داخلہ نے ڈی جی رینجرزکوجرائم پیشہ عناصرکے خلاف جاری ٹارگٹڈآپریشن میں کسی قسم کادباﺅخاطر میں نہ لاتے ہوئے شفاف اندازمیں ہرقیمت پرجاری رکھنے کی ازسرنوہدایت کی ہے جبکہ نائن زیروپر رینجرزایکشن سے قبل انٹیلی جنس معلومات پر مبنی جامع رپورٹ وزیرداخلہ کوجنوری میں بھجوا دی گئی تھی جس پروزیراعظم نے کارروائی کوسینیٹ کے الیکشن ہونے تک موخرکرنے کی ہدایت کی تھی۔

ذرائع کے مطابق وزیرداخلہ چوہدری نثارعلی خان نے جنوری میں ہی وزیراعظم نوازشریف کوقانون نافذکرنے والے اداروں کی ایم کیوایم کے پکڑے گئے پانچ کارکنوں کے جرائم پیشہ ریکارڈکے بارے میں آگاہ کردیاتھاجس پروزیراعظم نے سینیٹ الیکشن پرامن ماحول میں کرانے کے عمل کویقینی بنانے کی خاطر اسے موخرکیا جس کے بعدوزیراعظم نے پیپلزپارٹی کے شریک چیئرمین سے بھی اس بارے میں مشورہ کیا۔

آصف علی زرداری نے سندھ حکومت کووفاقی حکومت کے ساتھ مکمل تعاون کرنے کاحکم دیا اورآپریشن کاعمل مکمل ہونے تک اسے مکمل طورپرخفیہ رکھنے کی بھی ہدایت کی لہٰذا سینیٹ کے الیکشن کاعمل مکمل ہوتے ہی وزیرداخلہ نے ڈی جی رینجرزکوفوری ایکشن کاحکم دیاتھاجس پررینجرز نے مکمل ریکی اور مانیٹرنگ کے بعدچھاپہ مارکارروائی کی ۔

ایکسپریس نیوز کے ذرائع نے یہ بھی بتایاکہ بدھ کوکارروائی کے بعدگورنرسندھ عشرت العبادنے وزیرداخلہ چوہدری نثارعلی خان کوان کے بے گناہ کارکنوں کوحراست میں لینے کی شکایت کی جس پروزیرداخلہ نے ڈی جی رینجرزسے ٹیلی فون پر بات چیت کی اور انھیں حکم دیاکہ جرائم پیشہ عناصرکیخلاف شفاف اندازمیں ٹارگٹڈ آپریشن زیروٹالرینس پالیسی کے تحت ہرقیمت پرجاری رکھا جائے لیکن یہ خیال رکھیں کہ سے ناجائززیادتی نہ ہو۔

ذرائع کاکہناتھاکہ وزیرداخلہ نے ڈی جی رینجرز سے نائن زیروایکشن کی جامع رپورٹ بھی طلب کرلی جوضرورت پڑنے پرپارلیمنٹ میں بھی پیش کی جاسکتی ہے تاکہ ایوان کوکراچی میں امن کے قیام کے حوالے سے حکومتی اقدامات پراعتماد میں لیاجاسکے۔

مزید : قومی /اہم خبریں