برائلر موغی کے بعد اب عنقریب آپ لیبارٹری میں پید ا کی گئی مر غی کھائیں گے،سائنسدانوں نے کامیابی حاصل کر لی

برائلر موغی کے بعد اب عنقریب آپ لیبارٹری میں پید ا کی گئی مر غی کھائیں ...
برائلر موغی کے بعد اب عنقریب آپ لیبارٹری میں پید ا کی گئی مر غی کھائیں گے،سائنسدانوں نے کامیابی حاصل کر لی

  

تل ابیب (نیوز ڈیسک) ایک وقت تھا کہ لوگ دیسی مرغی کے گوشت سے لطف اندوز ہوا کرتے تھے لیکن پھر برائلر مرغی نے اسے ایک خواب بنادیا اور اب لیبارٹری میں تیار کردہ مرغی کا گوشت آنے والا ہے جس کے بعد برائلر مرغی کا گوشت بھی ماضی کی بات بن سکتا ہے۔

اسرائیل کی تل ابیب یونیورسٹی کے ماہر حیاتیات پروفیسر امیت گیفن نے ایک سالہ فزیبلٹی سٹڈی پر کام شروع کردیا ہے جس کا مقصد لیبارٹری میں مرغی کا گوشت تیار کرنا ہے۔ اس تحقیق کو این جی او ماڈرن ایگری کلچر فاﺅنڈیشن کا مالی تعاون حاصل ہے۔ فاﺅنڈیشن کی توقع ہے کہ لیبارٹری میں مرغی کا گوشت تیار ہونے کے بعد مرغیوں کو پالنے اور ان کی گردن پر چھری چلانے کا رواج ختم ہوجائے گا۔

وہ آدمی جو تکیے کے عشق میں ڈوب گیا،شادی کر لی

 پروفیسر گیفن کہتے ہیں کہ وہ اپنے تجربات میں مرغی کے واحد خلیے سے گوشت کا مکمل ٹکڑا تیار کریں گے جس کا ذائقہ، خوشبو اور غذائیت 100فیصد اصلی مرغی جیسی ہوگی۔ اس سے پہلے نیدر لینڈ میں کئے گئے تجربات میں لیبارٹری میں بیف کامیابی سے تیار کیا جاچکا ہے اور سائنسدان توقع ظاہر کررہے ہیں کہ مرغی کا گوشت بھی کامیابی سے تیار کرلیا جائے گا۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ اگلے 40 سال کے دوران دنیا کی آبادی 9 ارب سے بڑھ جائے گی اور اتنی بڑی آبادی کی گوشت کی ضرورت صرف مصنوعی طریقوں سے پوری کی جاسکے گی۔

مزید : ڈیلی بائیٹس