پاکستان ہماری علاقائی حدود کی خلاف ورزی کر رہا ہے، افغانستان کا اقوام متحدہ میں واویلا

پاکستان ہماری علاقائی حدود کی خلاف ورزی کر رہا ہے، افغانستان کا اقوام متحدہ ...

  

نیویارک/کابل(اے این این) اقوام متحدہ میں افغانستان کے مستقل مندوب محمود سائیکال نے الزام عائد کیا ہے کہ پاکستان افغانستان کی علاقائی حدود کی خلاف ورزی کررہا ہے، ہمسایہ ملک نے اپنی سرزمین پر دہشت گردی کے حالیہ واقعات کے بعد تحقیقات کیے بغیر افغانستان پر الزام لگا دیا اور سرحد بند کردی ،تجارت روک دی ۔ ملک میں مقیم یا وہاں کا سفر کرنے والے افغان باشندوں کو ہراساں کرنا شروع کردیا۔ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں اظہار خیال کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ پاکستان میں گزشتہ ماہ ملک میں دہشت گردی کے واقعات میں انسانی جانوں کے ضیاع پر افغانستان نے افسوس کا اظہار کیا، ہم نے ہمیشہ پاکستان میں دہشت گردی کی مذمت کی انہوں نے کہاکہ ایسے اقدامات عالمی تجارتی تنظیم (ڈبلیو ٹی او) کے اصولوں کی واضح خلاف ورزی ہے۔ انہوں نے دعویٰ کیا کہ جنوری سے اب تک پاکستان میں59 بار افغانستان کی علاقائی و فضائی حدود کی خلاف ورزی کی۔ سرحد پار سے گولہ باری کے نتیجے میں ہمارے مشرقی صوبوں سے 450 خاندانوں نے نقل مکانی کی اور جنگلات تباہ ہوئے۔ افغان مندوب نے دعویٰ کیا کہ افغانستان کا تنازعہ ملک کا پیدا کردہ نہیں بلکہ مسلط کردہ ہے، ملک میں یہ غیر قانونی منشیات، پرتشدد انتہا پسندی، ریاستی سرپرستی میں دہشت گردی کا گٹھ جوڑ ہے۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ درپردہ قوتوں کے ذریعے تشدد کو ہوا دی جارہی ہے۔ کئی سال سے بامعنی اور نتیجہ خیز مذاکرات کے فقدان کے نتیجے میں پاکستان اور افغانستان کے درمیان عدم اعتماد بڑھا ہے جسے ختم کرنے کیلئے سیاسی عزم اور بھرپور رابطوں کی ضرورت ہے۔ افغانستان ہمیشہ تعمیری اور نتیجہ خیز مذاکرات کیلئے تیار رہا ہے۔

مزید :

صفحہ آخر -