وزیر ریلوے کو پراپرٹی اینڈ لینڈ ڈیپارٹمنٹ کی ری سٹرکچرنگ کانیا ماڈل پیش

وزیر ریلوے کو پراپرٹی اینڈ لینڈ ڈیپارٹمنٹ کی ری سٹرکچرنگ کانیا ماڈل پیش

  

ملتان(جنرل رپورٹر)وزیر ریلویز خواجہ سعد رفیق کو پاکستان ریلویز کے پراپرٹی اینڈلینڈ ڈیپارٹمنٹ کی ری سٹرکچرنگ کا نیا ماڈل پیش کردیا گیا ہے جس میں ڈیپارٹمنٹ کا سربراہ ڈائریکٹر جنرل کے عہدے کا افسر ہوگا جو براہِ راست چیف ایگزیکٹو آفیسر کو جوابدہ ہوگا۔ پراپرٹی اینڈ لینڈ ڈیپارٹمنٹ کی تنظیم نو کے حوالے سے اجلاس اتوار کے روزوزیر ریلویزخواجہ سعد رفیق کی زیرصدارت ریلوے ہیڈ(بقیہ نمبر9صفحہ12پر )

کوارٹرز آفس لاہور میں منعقد ہوا جس میں چیف ایگزیکٹوآفیسر محمدجاویدانور، مشیرریلویز انجم پرویز، ڈائریکٹرپراپرٹی اینڈلینڈ ارشدسلام خٹک، چیف پرسانل آفیسرشعیب عادل سمیت اعلیٰ افسران نے شرکت کی۔ خواجہ سعدرفیق نے ہفتہ وار تعطیل کے باوجود کام کرنے پر ریلوے افسران کو سراہااور کہا کہ پاکستان ریلویز وفاقی حکومت کا وہ واحد ادارہ ہے جو ہفتے کے روز چھٹی نہیں کرتا۔ ایسے میں پاکستان ریلویز کے افسران نے ان کی ہدایت پر ہفتے بھر میں چھٹی کے ایک روز کوبھی قربان کرکے ثابت کیا ہے کہ وہ اپنے ادارے کی ترقی کے لیے کمٹڈ ہیں۔خواجہ سعد رفیق نے کہا کہ وہ دن گزر گئے جب ریلوے کی قیمتی زمینوں کولاوارث سمجھاجاتا تھااورقبضہ گروپ ان پر نظریں جمائے ہوتے تھے۔ وفاقی وزیر ریلویز کو بریفنگ میں بتایا گیا کہ ڈائریکٹر جنرل کے ساتھ ڈائریکٹر، جوائنٹ ڈائریکٹر، ڈپٹی ڈائریکٹر، سیکڑسپشلسٹ، ڈیٹابیس ایڈمنسٹریٹراور دیگر افسران پر مشتمل ڈائریکٹوریٹ آف پراپرٹی اینڈ لینڈ پاکستان ریلویز کے لینڈ بنک کی مینجمنٹ کرے گا۔ وزیر ریلویز نے ہدایت کی کہ ہیڈکوارٹرز کے ساتھ ڈویژن کی سطح پر لینڈ مینجمنٹ کے لیے طریقہ کار وضع کیا جائے۔ انہوں نے ہدایت کی کہ ریلوے ٹریکس، پلوں اور دیگر آپریشنل انفراسٹرکچر پر تعینات پروفیشنلز سے ریلوے کی زمینوں کی دیکھ بھال کے معاملات واپس لیے جائیں اور اس کے لیے مجوزہ نظام میں ڈائریکٹوریٹ خود اپنی ذمہ داریاں سنبھالے۔ انہوں نے کہا کہ آنے والے دنوں میں ریلوے کے فریٹ اور پسنجر آپریشنز میں اضافہ ہوگا اور پاکستان ریلویز کو سہولت اور تحفظ کے نئے معیار یقینی بنانے ہوں گے۔

ماڈل پیش

مزید :

ملتان صفحہ آخر -