”13 مارچ کرکٹ کی تاریخ کا سیاہ ترین دن۔۔۔“ آج کے روز نام نہاد جمہوری بھارتیوں نے کرکٹ کے میدان میں وہ کام کیا تھا جو رہتی دنیا تک بھارت کا منہ کالا کرتا رہے گا، کیا ہوا تھا؟ آپ بھی جانئے

”13 مارچ کرکٹ کی تاریخ کا سیاہ ترین دن۔۔۔“ آج کے روز نام نہاد جمہوری بھارتیوں ...
”13 مارچ کرکٹ کی تاریخ کا سیاہ ترین دن۔۔۔“ آج کے روز نام نہاد جمہوری بھارتیوں نے کرکٹ کے میدان میں وہ کام کیا تھا جو رہتی دنیا تک بھارت کا منہ کالا کرتا رہے گا، کیا ہوا تھا؟ آپ بھی جانئے

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) ہار، جیت ہر کھیل کا حصہ ہوتا ہے اور کرکٹ میں بھی ایک ٹیم جیتتی ہے جو دوسری کو شکست کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ اپنی ٹیم کی جیت پر شائقین جہاں خوشی سے جھوم اٹھتے ہیں تو وہیں شکست پر غم سے نڈھال بھی ہوتے ہیں لیکن بھارتی شائقین کی شکست پر ردعمل کی تاریخ کچھ زیادہ اچھی نہیں ہے۔

معروف برانڈز کے گرمیوں کے ملبوسات کیلئے شاندار سہولت متعارف، خواتین کیلئے خوشخبری آگئی

13 مارچ 1996ءکرکٹ کی تاریخ کا سیاہ ترین دن ہے جب بھارتی شائقین ورلڈکپ کے سیمی فائنل میں سری لنکا کے ہاتھوں اپنی ٹیم کی ”درگت“ بنتی دیکھ کر آپے سے باہر ہو گئے اور سٹیڈیم میں کرسیوں کو آگ لگا دی جس کے باعث میچ ہی روکنا پڑ گیا اور بالآخر میچ مکمل ہوئے بغیر ہی سری لنکا کو فاتح قرار دیدیا گیا۔

اس میچ میں سری لنکا نے پہلے بیٹنگ کرتے ہوئے 251 رنز بنا کر بھارت کو 252 رنز کا ہدف دیا۔ ابتداءمیں تو بھارتی بلے باز عمدہ کارکردگی پیش کرتے رہے، بالخصوص سچن ٹنڈولکر تو بھرپور فارم میں نظر آئے اور 65 رنز بنائے۔ بھارت ٹیم نے 1 وکٹ کے نقصان پر 98 رنز بنا لئے تھے کہ اچانک سب کچھ ہی بدل گیا۔

سچن ٹنڈولکر سٹمپ آﺅٹ ہوئے تو 120 کے مجموعی سکور پر 8 کھلاڑی پویلین لوٹ گئے اور بھارت بظاہر جیتی بازی شرمناک طریقے سے ہارنے کے دہانے پر پہنچ گیا اور پھر شائقین نے وہ کام کیا جو رہتی دنیا تک بھارت کا منہ کالا کرتا رہے گا۔ ابھی بھارت کی 2 وکٹیں باقی تھیں کہ مشتعل شائقین نے سٹیڈیم میں نعرے بازی شروع کر دی اور سری لنکن کھلاڑیوں پر بوتلوں کی ”بارش“ کر دی۔

سری لنکن کھلاڑیوں پر ”حملے“ کے بعد بھی دل کی بھڑاس نہ نکلی تو سٹیڈیم میں موجود کرسیوں کو ہی آگ لگا دی جس کے باعث پولیس کو مداخلت کرنا پڑی اور میچ جاری رکھنا ناممکن ہو گیا اور بالآخر جلد ہی یہ بھی ظاہر ہو گیا کہ اب میچ کسی بھی صورت دوبارہ شروع نہیں ہو سکے گا۔

شادی کے سیزن میں اس چیز سے بال دھونے سے ان میں ایسی چمک آئے گی کہ سب آپ کی تعریف کرنے پر مجبور ہوجائیں گے

مشتعل بھارتی شائقین کو قابو کرنے میں بہت زیادہ وقت ضائع ہو گیا جس پر میچ ریفری کلائیو لوئیڈ نے سری لنکا کو فاتح قرار دیدیا۔ اس میچ میں پیش آنے والی صورتحال کے بعد بہت سی غیر ملکی ٹیمیں بھارت میں کھیلنے سے ڈرنے لگیں اور بھارت کو یہ داغ دھونے میں کئی سال لگے۔

بھارت نے میچ میں جس طرح کی کارکردگی کا مظاہرہ کیا تھا، اس کا ہارنا حتمی تھا لیکن اس روز اصل شکست کرکٹ اور ایڈن گارڈن گراﺅنڈ کی ہوئی تھی، اگر کوئی بھارتی سمجھے تو۔۔۔

مزید :

کھیل -