پنجاب سے باہر رجسٹریشن زور پکڑ گئی، لگژری ٹیکس کم کیا جائے

پنجاب سے باہر رجسٹریشن زور پکڑ گئی، لگژری ٹیکس کم کیا جائے

  

لاہور (بزنس رپورٹر) رافع موٹرز کے چیف ایگزیکٹو آفیسر اور چیئرمین الخدمت گروپ ٹاؤن کار ڈیلرز ایسوسی ایشن مولانا شوکت علی روڈ آصف اختر خان نے روزنامہ ’’پاکستان‘‘ کے ساتھ خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ پنجاب میں نئی گاڑیوں کی رجسٹریشن پر عائد لگژری ٹیکس زیادہ ہونے کی وجہ سے گاڑیوں کی اسلام آباد میں رجسٹریشن زور پکڑ گئی ہے کیونکہ وہاں گاڑیوں کی رجسٹریشن پر لگژری ٹیکس نہایت کم ہے جس وجہ سے گاڑیوں کے خرید کنندگان اپنی گاڑیوں کو اسلام آباد میں رجسٹر کروا رہے ہیں اس سے کار ڈیلرز کے کام پر حکومت پنجاب کے ٹیکس ریونیو پر نہایت منفی اثرات مرتب ہو رہے ہیں۔ آصف اختر خان نے کہا کہ کار ڈیلرز کا کاروبار پہلے ہی مندے کا شکار تھا کہ OLX پر گاڑیوں کی بڑھتی ہوئی فروخت نے کاروبار کو مزید تباہی سے دوچار کر دیا کیونکہ OLX پر گاڑی کی خرید و فروخت پر کوئی ٹیکس نہیں ہے جبکہ کار ڈیلرز حکومت کے مروجہ ٹیکس نظام کے تحت تمام قانونی کارروائیاں مکمل کرتے ہوئے تمام تر ٹیکس ادا کرتے ہیں جن کی شرح بہت زیادہ ہے۔ اب موجودہ حالات کے پیش نظر کاروبار کرنا مشکل ہو چکا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پنجاب میں پرانی گاڑیوں کی ٹرانسفر کروائی جاتی ہیں یا پنجاب سے باہر ٹرانسفر کرا لی جاتی ہیں۔ علاوہ ازیں نئی اور پرانی گاڑیوں کے نرخ بڑھانے کا بھی کوئی پیمانہ نہیں ہے۔ اسی طرح گاڑیوں کی درآمد اگر حکومتی معاملات کے باعث لیٹ ہو جائے تو اس کا تمام تر نقصان امپورٹر کو برداشت کرنا پڑتا ہے جو اس کے کاروباری نقصان کا باعث بنتا ہے۔ ایک سوال کے جواب میں آصف اختر خان نے بتایا کہ ملک میں بننے والی تمام چھوٹی بڑی گاڑیوں پر اصل قیمت سے زائد اوون کی وصولی دھڑلے سے جاری ہے جو صارف کے حقوق پر ایک ڈاکہ ہے اور ناانصافی ہے۔ انہوں نے وزیراعلیٰ پنجاب میاں شہبازشریف سے اپیل کی کہ وہ کار ڈیلرز کے مسائل پر نوٹس لے کر مسائل کے حل کے لئے احکامات جاری کریں تاکہ ہمارا کاروبار تباہی سے دوچار ہونے سے بچ سکے اور دوسری طرف صارفین کے حقوق کے تحفظ کے ساتھ ساتھ حکومت پنجاب کے ٹیکس ریونیو میں بھی اضافہ ہو سکے۔

مزید :

کامرس -