شہر قائد میں دودھ کی قیمت کو پر لگ گئے ، قیمت 100روپے لیٹر ہوگئی

شہر قائد میں دودھ کی قیمت کو پر لگ گئے ، قیمت 100روپے لیٹر ہوگئی

  

 کراچی (اکنامک رپورٹر) شہر قائد میں دودھ کی قیمت کو پر لگ گئے اور قیمت سو روپے لیٹر ہوگئی جبکہ عوام نے اضافہ کو ظلم قرار دیا ہے۔تفصیلات کے مطابق کراچی میں ڈیری فارمزز کی من مانی جاری ہے ، کراچی کے ڈیری فارمرز اور ہول سیلرز نے عدالتی حکم کی دھجیاں اڑا دیں اور دودھ کی قیمت بیس روپے لٹر بڑھا کر انتظامیہ کو چیلنج کر دیا۔دودھ کی قیمت میں من مانا اضافہ کردیا۔ڈیری فارمزز نے دودھ کی قیمت میں من مانا اضافہ کردیا، جس کے بعد ڈیری فارمرز نے دودھ95روپے فی لیٹر فروخت کرنا شروع کردیا جبکہ ریٹیلرز نے دودھ کی فی لیٹرفروخت 100روپے کر دی ہے۔عوام نے دودھ کی قیمت میں اضافہ کو سراسر ظلم قرار دیا جبکہ دودھ ریٹیلز کا کہناہے کہ اضافہ فارمرز کی جانب سے کیا جارہا ہے جبکہ فارمرز اضافے کی وجہ پیداواری لاگت میں اضافہ بتاتے ہیں۔ یاد رہے کہ سندھ ہائی کورٹ نے دودھ کی قیمت 85روپے فی لیٹر برقرار رکھنے کا حکم دیدیا جبکہ کمشنر کراچی کو اسٹیک ہولڈرز کا اجلاس بلا کر قیمتوں کا ازسر نو جائزہ لینے کا بھی حکم دیا۔خیال رہے کہ کراچی میں دودھ مافیا کی جانب سے دودھ کا بحران پیدا کرنے کی کوششیں کا میاب نہ ہوسکیں، دودھ کی قیمیتوں میں اضافے کے حوالے سے ہونے والے متعدد مذاکراتی دور بے نتیجہ رہے۔ذرائع کا کہنا تھا کہ انتظامیہ دودھ کی قیمت میں 5 سے 10 روپے فی لیٹر اضافہ کرنے کے لیے تیار ہے تاہم ڈیری فارمرز دودھ کی قیمت میں 15 سے 20 روپے فی لیٹر کا ہوشربا اضافہ کرنا چاہتے ہیں۔

اس سے قبل ڈیری فارمرز کا دودھ کی قیمتوں میں ازخود اضافے کا اعلان کیا تھا اور دودھ کی فی لیٹر قیمت 90 روپے مقرر کردی تھی ، جس کے بعد اسسٹنٹ کمشنر نے اجلاس پر چھاپہ مارکر متعدد افراد کو گرفتار کرلیا تھا۔واضح رہے کہ خیال رہے سپریم کورٹ نے گذشتہ دنوں انسانی صحت کے لیے مضر صحت بھینسوں کو زیادہ پیداوار کے لیے لگائے جانے والے ہارمونز کے انجیکشن پر پابندی لگادی تھی، جس کے بعد ڈیری فارمرز بھینسوں کی تعداد بڑھا کر دودھ کی پیداوار بڑھانے کے بجائے مسلسل دودھ کی قمیت بڑھانے کے لیے انتظامیہ پر دبا ڈال رہے ہیں۔

مزید :

کامرس -