عوامی رکشہ یونین کا ورکرز کنونشن، ذیشان اکمل لاہور کے صدر منتخب

عوامی رکشہ یونین کا ورکرز کنونشن، ذیشان اکمل لاہور کے صدر منتخب

  

لاہور(جنرل رپورٹر،نمائندہ پاکستان،کامرس رپورٹر)جوہر ٹاؤن میں گزشتہ روز عوامی رکشہ یونین کا ورکرز کنونشن منعقد ہواجس میں عوامی رکشہ یونین کے سینکڑوں عہدیداران نے شرکت کی ۔اس موقع پررواں سال کیلئے ذیشان اکمل کو لاہور کا صدر نامزد کیا گیا اور سابق صدر حاجی رفاقت کو ممبرسازی مہم کا انچارج لگا دیا گیا ہے۔رکشہ ڈرائیوروں کو درپیش مسائل کے حوالے سے عوامی رکشہ یونین 18مارچ کو پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے ، پرائیویٹ کمپنی کی کاروں کے بطور ٹیکسی استعمال ، ایل ٹی سی کے ظالمانہ چالانوں،مہنگائی،ناقص ایل پی جی سلنڈر تیار کرنے والی کمپنیوں،شہرمیں سٹینڈ نہ ملنے، لی پارکنگ کے سابق رکشہ سٹینڈوں پر قبضے کے خلاف ہزاروں رکشوں، سینکڑوں گاڑیوں اورموٹر سائکلوں پر مشتمل بہت بڑی احتجاجی ریلی نکالنے کا فیصلہ کیا گیا ہے ۔جس کی قیادت عوامی رکشہ یونین کے مرکزی چیئرمین مجید غوری کریں گے ریلی کے اختتام پر بہت بڑا جلسہ ہوگاجس میں مجید غوری اپنی سیاسی پارٹی بنانے کا اعلان کریں گے۔اس حوالے سے انتظامات اور استقبالیہ کمیٹی کا انچارج غلام حسین کو بنا دیا گیا ہے سیاسی پارٹی کے افتتاح کے موقع پر اچھی شہرت کے مالک سیاست دانوں کو بھی شرکت کی دعوت دی جائیگی۔کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے مجیدغوری نے کہا کہ روٹی ، کپڑا، مکان، روزگار، یکساں نظام تعلیم،غریب کو باعزت بنانے کے دعوے دار ستر سال سے غریبوں کے ووٹوں سے منتخب ہوکر دن بدن مہنگائی میں اضافے کے ذریعے ان سے روٹی چھین رہے ہیں،کپڑے اتروا رہے ہیں،انہی کے کارندے غریبوں اور کمزوروں کے مکانوں اور پلاٹوں پر قبضے کر رہے ہیں،اعلیٰ تعلیم یافتہ نوجوان بے روزگاری کے باعث ان پڑھوں کی طرح مزدوریاں کرنے پر مجبور ہیں یا جرائم کی دلدل میں دھنسے جار ہیں۔ان کے اپنے بچے پیدا ہوتے بچے ہم پر حکمرانی کی تربیت لینا شروع کر دیتے ہیں جس پارٹی کا اقتدار ختم ہوتا ہے اس پارٹی کے سربراہ اور سرکردہ لیڈر 5سال کی چھٹیوں پر امریکہ ، لندن، سویزرلینڈ،کینیڈاو دیگر یورپی ممالک کا رخ کر لیتے ہیں اور اپنے دور اقتدار میں لوٹی دولت سے وہاں لطف اندوز ہوتے ہیں ان کے کاروبار، دوسرے ممالک میں ہیں، ان کی تعلیم علاج یورپی ممالک میں ہے الیکشن قریب آتے ہی بریانی اور روغنی نانوں سے ہمارے ووٹ خریدنے آجاتے ہیں۔ مجید غوری کاکہنا تھا کا ہم نے سیاسی پارٹی بنانے کا اعلان اس لئے کیا ہے کہ اپنے طبقے کی آواز ہم خود بنیں گے اور اپناحق چھین کر لیں گے۔ہم میں اور دوسری پارٹیوں میں سب سے بڑا فرق یہ ہے کہ ہمارا جینا مرنا یہیں ہے۔اب تک برسر اقتدار آنے والی پارٹیوں نے ہمارے ملک کو کھربوں ڈالر کا مقروض کر دیا ہے۔قرضہ یہ لیتے ہیں کرپشن یہ کرتے ہیں بھگتنہ عوام کو پڑتا ہے۔انہوں نے کہا کہ ہمارا افتتاحی جلسہ ہی ملک کی سیاست کا رخ بدل دے گا۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -