پرائیویٹ حج سکیم کو ختم نہیں کیا جارہا، عرفان صدیقی

پرائیویٹ حج سکیم کو ختم نہیں کیا جارہا، عرفان صدیقی

  

لاہور( ڈویلپمنٹ سیل) وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کے مشیر برائے قومی تاریخ و ادبی ورثہ عرفان صدیقی نے کہا کہ حج 2018ء میں پرائیویٹ اور سرکاری حج سکیم کے تحت سعودی عرب جانے والے عازمین حج کی خدمت اور ان کے لئے بہترین انتظامات موجود ہ حکومت کی اولین ترجیح ہے ان خیالات کا اظہار انہوں نے حج آرگنائزر ایسو سی ایشن آف پاکستان (ہوپ) کے مرکزی رہنما ؤں حافظ شفیق کاشف، چوہدری احسان اللہ اور علامہ یوسف صدیقی سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ جنہوں نے آج مشیر وزیر اعظم سے خصوصی ملاقات کی عرفان صدیقی نے کہا کہ پرائیویٹ حج سکیم کو ختم نہیں کیا جارہا بلکہ حکومت پرائیویٹ سیکٹر کے تمام مسائل حل کر کے سرکاری اور پرائیویٹ حجاج کو وہ تمام سہولتیں دینا چاہتی ہے جن کا ان کے ساتھ پاکستان میں وعدہ کیا جاتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ سرکاری حج سکیم میں اتنی بڑی تعداد میں درخواستیں آنے کے بعد سرکاری کوٹہ میں اضافہ کا مقصد زیادہ سے زیادہ غریب اور عام شہریوں کو فریضہ حج کی ادائیگی کے لئے سہولیات پہنچانا ہے لہذا یہ تاثر بے بنیاد ہے کہ حکومت پرائیویٹ سیکٹر کو حج کی خدمت سے محروم رکھنا چاہتی ہے۔ انہوں نے یہ کہا کہ اب جبکہ معاملات عدالتوں میں ہیں مگر حکومت حج کوٹہ کے 67فیصد سرکاری اور بقا یا پرائیویٹ حج سکیم کے ذریعے ہی لے کر جانا چاہتی ہے لہذا عدالتوں کے فیصلے کی روشنی میں حج انتظامات کئے جائیں گے۔

مزید :

صفحہ آخر -