مقبوضہ کشمیر ، قابض بھارتی فوج کے ہاتھوں مزید 3کشمیری شہید ، وادی میں احتجاج ، کرفیو نافذ

مقبوضہ کشمیر ، قابض بھارتی فوج کے ہاتھوں مزید 3کشمیری شہید ، وادی میں احتجاج ...

  

سرینگر(آئی این پی)مقبوضہ کشمیر میں بھارتی قابض فوج نے مزید 3کشمیریوں کو شہید کردیا جس پرعلاقے میں احتجاجی مظاہرے شروع ہوگئے ،لوگ سڑکوں پر نکل آئے اور بھارت کے خلاف شدیداحتجاج کیا گیا،کشیدگی کے پیشِ نظرسرینگر کے بیشتر علاقوں میں کرفیو لگا دیا گیا جبکہ تمام تعلیمی ادارے بند کردیے گئے تمام امتحانات بھی ملتوی اور انٹرنیٹ سروسز کو بھی محدود کردیا گیا ۔میڈیا رپورٹس کے مطابق مقبوضہ کشمیر میں بھارتی قابض فوج نے مزید 3کشمیریوں کو شہید کردیا جس پرعلاقے میں احتجاجی مظاہرے شروع ہوگئے۔ بھارتی پولیس نے تینوں کشمیریوں کو جھڑپ کے دوران مارنے کا دعویٰ کیا ہے ۔ اس واقعے کے بعد اس متنازعہ علاقے میں بھارت مخالف مظاہروں کا نیا سلسلہ شروع ہو گیا ہے۔ پولیس کے مطابق بھارتی فورسز نے باغیوں کی موجودگی کی مخبری پر پیر کو علی الصبح ضلع اننت ناگ کے ایک گاؤں میں چھاپہ مارا تو فائرنگ کا تبادلہ شروع ہو گیا۔ تین کشمیریوں کی شہادت کی خبر پھیلی تو کئی علاقوں میں بھارت مخالف مظاہرے شروع ہو گئے اور مظاہرین اور پولیس کے درمیان جھڑپیں بھی ہوئی۔کشیدگی کے پیشِ نظر وادی کے گرمائی صدر مقام سرینگر کے بیشتر علاقوں میں کرفیو لگا دیا گیا ہے جب کہ سرینگر ضلعے کے تمام تعلیمی ادارے بند کردیے گئے ہیں۔پوری وادی کشمیر میں بورڈ اور یونیورسٹی سطح پر پیر کو لیے جانے والے تمام امتحانات بھی ملتوی کردیے گئے ہیں اور انٹرنیٹ سروسز کو بھی محدود کردیا گیا ہے۔حکام کا کہنا ہے کہ یہ اقدامات مظاہروں اور تشدد کے خدشے کے پیشِ نظر اٹھائے گئے ہیں۔علاوہ ازیں حریت فورم کے چیئرمین میر واعظ عمر فاروق کو انکی رہائش گاہ پر نظربند رکھا جبکہ جموں وکشمیر لبریشن فرنٹ کے چیئرمین محمد یاسین ملک کو احتجاجی مظاہرے کی قیادت سے روکنے کیلئے مائسمہ میں انکی رہائش گاہ سے گرفتار کرلیا۔ محمد یاسین ملک کو کوٹھی باغ پولیس اسٹیشن سرینگر میں نظربند کردیاگیاہے۔

کشمیر ،شہادتیں

مزید :

علاقائی -