عاصمہ رانی قتل ، راضی نامہ کی خبریں من گھڑت ہیں : بھائی محمد عمران

عاصمہ رانی قتل ، راضی نامہ کی خبریں من گھڑت ہیں : بھائی محمد عمران

  

کوہاٹ(بیورورپورٹ) عاصمہ رانی کے قاتلوں کے ساتھ راضی نامہ کی خبریں من گھڑت افواہ ہے ملزم کو قانون کے مطابق سزا ہونے کا حق ہیں معاشرے کے مسیحا کا گھر کی دہلیز پر قتل دہشت گردی ہے اور دہشت گردی کے لیے قانون میں کوئی معافی نہیں ہم عدلیہ سے انصاف مانگتے ہیں شاہ زیب اگر بے گناہ ہے تو اس کے فیصلے کا اختیار عدالت کے پاس ہے حکام بالا تک آواز پہنچانے پر میڈیا اور مروت قوم کا مشکور ہوں ملزم کو شارجہ سے گرفتار کرنے پر انٹرپول‘ آئی جی خیبر پختونخوا‘ ڈی پی او کوھاٹ اور سپریم کورٹ کا ازحد شکرگزار ہوں یہ بات میڈیکل کالج مقتول کی طالبہ عاصمہ رانی کے بھائی محمد عمران نے ایک پرہجوم پریس کانفرنس سے خطاب کے دوران کیں اس موقع پر ان کے والد غلام دستگیر بھی موجود تھے محمد عمران نے کہا کہ عاصمہ رانی کی اپنے چچازاد بھائی سے منگنی ہو چکی تھی پختون معاشرے میں کسی لڑکی کو شادی پر مجبور کرنا روایات اور قانون کے خلاف ہے عاصمہ رانی کا شادی سے انکار کا مطلب یہ تو نہیں کہ اسے قتل کیا جائے اور یہ قتل حادثاتی نہیں بلکہ پری پلان کا حصہ تھا جو سراسر دہشت گردی کے زمرے میں آتا ہے ان کا کہنا تھا کہ ہمارا آفریدی قوم کے ساتھ کوئی تنازعہ نہیں مروت قبیلے کی طرح وہ بھی معاشرے میں معزز مقام رکھتے ہیں مگر ایک مچھلی سارے تالاب کو گندا کرنے کی مصداق ہمارا مجرم مجاہد آفریدی ہے آفریدی قوم نہیں‘ شاہ زیب کے بارے میں ان کا کہنا تھا کہ اسے تو ہم نے نہیں مجاہد کے بھائی صادق اللہ کی نشاندہی پر حراست میں لیا گیا ہے اگر وہ بے گناہ ہے تو عدالت اسے رہا کر سکتی ہے انہوں نے سوشل میڈیا پر راضی نامہ کی خبریں وائرل کرنے کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ یہ سب من گھڑت افواہیں اور ہم پر پریشر ڈالنے کے لیے ہے راضی نامے کا تو ہم سوچ بھی نہیں سکتے اور پیسے لے کر راضی نامہ کر کے ہم اپنی بہن کا کسی صورت سودا نہیں کرنا چاہتے ہم پختون ہیں ہمارا اپنا کلچر ہے ہم تو مجاہد آفریدی کو پھانسی پر لٹکا دیکھنا چاہتے ہیں اور یہی انصاف کا تقاضا ہے ایک سوال کے جواب میں محمد عمران کا کہنا تھا کہ ہم کوھاٹ میں غیر مقامی ہونے کے ناطے عدم تحفظ کا شکار ہیں اسی لیے ہم نے اپنا مقدمہ کوھاٹ کے بجائے پشاور‘ بنوں یا ڈیرہ اسماعیل خان منتقل کرنے کی استدعا کی ہے اس لیے بھی کوھاٹ میں مجاہد آفریدی کا چچا اور پی ٹی آئی صدر بھی وکیل ہیں ملزم کا ماموں اور شاہ زیب کا بھائی بھی وکالت کرتے ہیں لہٰذا کوھاٹ میں یقیناًوہ مقدمہ پر اثر انداز ہوں گے ان کا کہنا تھا کہ ملزم کو سزا ہونے کے بعد ان کی طرف سے شدید مزاحمت کا سامنا کرنا پڑے گا جس کے لیے ہم ذہنی طور پر تیار ہیں۔

مزید :

کراچی صفحہ اول -