سندھ ہائیکورٹ نے ترک خاندانوں کوملک بدر کرنے سے روک دیا

سندھ ہائیکورٹ نے ترک خاندانوں کوملک بدر کرنے سے روک دیا
سندھ ہائیکورٹ نے ترک خاندانوں کوملک بدر کرنے سے روک دیا

  

کراچی (ویب ڈیسک) سندھ ہائی کورٹ نے پاکستان میں موجود ترک خاندانوں کو ملک بدر کرنے سے روک دیا،عدالت نے ترک خاندانوں کو پاکستان میں رہنے کے لیے مشروط اجازت دے دی۔

عدالت نے اپنے حکم میں کہا ہے کہ ترک خاندان پاکستان میں پناہ گزین کی حیثیت سے رہ سکتے ہیں۔ اقوام متحدہ نے بھی پاکستان میں موجود ترک خاندانوں کو پناہ گزین قرار دیا تھا۔ پیر کوجسٹس منیب اختر اور جسٹس مسز اشرف جہاں پر مشتمل دو رکنی بینچ نے سندھ میں مقیم آٹھ اساتذہ اور ان کے اہل خانہ کی جانب سے دائر درخواست کی سماعت کی۔

درخواست گزار کے وکیل کا کہنا تھا کہ ترک خاندانوں نے ترکی میں جان کو خطرے کے پیش نظر اقوام متحدہ میں درخواست دی تھی، انہیں ملک چھوڑنے پر مجبور اور ہراساں کیا جا رہا ہے۔ درخواست گزار قابل قبول ویزے کے ساتھ پاکستان آئے تھے، ویزے کی دوبارہ تجدید نہیں کی گئی۔ درخواست گزار اقوام متحدہ کے پناہ گزینوں کے حیثیت سے یہاں رہائش پذیر ہیں۔

مزید :

علاقائی -سندھ -کراچی -