افغانستان سے درآمدات پر ویلیوایشن میں30فیصداضافے کی تجویز

افغانستان سے درآمدات پر ویلیوایشن میں30فیصداضافے کی تجویز

اسلام آباد(آن لائن)افغانستان سے پاکستان کے لیے درآمد ہونے والے تازہ پھلوں، ڈرائی فروٹ، سبزیوں،جڑی بوٹیوں، گائے اور بھینسوں کی کھالوں سمیت 33 اشیا کی درآمدہ ویلیوایشن کی شرح میں 30فیصد اضافے کی تجویز پیش کردی گئی ہے۔میڈیا رپورٹس کے مطابق یہ تجویز ماڈل کسٹمز کلکٹریٹ پشاور کی جانب سے پیش کی گئی ہے تاہم خیبر پختونخوا چیمبرآف کامرس، فرنٹیئر کسٹمز ایجنٹس گروپ اور افغانستان کے ساتھ تجارت سے وابستہ کاروباریوں نے افغانستان سے درآمد ہونے والی مذکورہ اشیا کی ویلیو ایشن 30فیصد بڑھانے کی تجویز کی مخالفت کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاک افغان باہمی تجارت کو فروغ دینے کے تناظر میں ان اشیا کی ویلیوایشن کی شرح میں 10 تا15 فیصد کا اضافہ کیا جائے۔پاک افغان تجارت کے حوالے سے ڈپٹی کلکٹر کسٹمز طورخم ڈاکٹر فرید کی صدارت میں لوکل ویلیو ایشن کمیٹی کے منعقدہ اجلاس میں بتایا گیا کہ لوکل ویلیو ایشن کمیٹی نے افغانستان سے پاکستان کے لیے درآمد ہونے والے تازہ پھلوں، ڈرائی فروٹ، تازہ سبزیاں، جڑی بوٹیاں، گائے اور بھینسوں کی کھالوں سمیت دیگر اشیا کی ویلیوایشن کی شرح میں ہر سال 10فیصد اضافے کی منظوری دی تھی لیکن گزشتہ تین سال سے ویلیوایشن کی شرح میں کسی قسم کا کوئی اضافہ نہیں کیا گیا ہے۔

لہٰذا رواں سال ان اشیا کی ویلیو ایشن کی شرح میں یکدم 30فیصد اضافہ کیا جائے گا لیکن دوران اجلاس تاجربرادری کے نمائندوں کی جانب سے لوکل ویلیو ایشن کمیٹی کی مذکورہ تجویز سے عدم اتفاق کیا گیا اور کہا گیا کہ یک جنبش قلم ویلیوایشن کی شرح میں30فیصد اضافے سے دونوں ممالک میں قانونی تجارت کی راہ میں رکاوٹیں پیدا ہوں گی اوران اشیا کی ملک میں اسمگلنگ کو فروغ حاصل ہوگا۔

تاجربرادری کے نمائندوں نے مذکورہ اشیا کی ویلیو ایشن میں30 فیصد کی بجائے 10سے 15 فیصد بڑھانے کی تجویز دیتے ہوئے کہا کہ لوکل ویلیو ایشن کمیٹی میں کسٹمز کے اعلیٰ اور سینئر افسران شامل کیے جائیں جن کے پاس اشیا کی ویلیوکے تعین کا مکمل اختیارہو۔

مزید : کامرس