بس حملہ ، عینی شاہدین کے لرزہ خیز انکشافات، ہمت ایسی کہ داد دیئے بناءنہ رہ سکیں

بس حملہ ، عینی شاہدین کے لرزہ خیز انکشافات، ہمت ایسی کہ داد دیئے بناءنہ رہ ...
 بس حملہ ، عینی شاہدین کے لرزہ خیز انکشافات، ہمت ایسی کہ داد دیئے بناءنہ رہ سکیں

  

کراچی (مانیٹرنگ ڈیسک) صفورہ چورنگی کی حدودمیں ماروڑا گوٹھ اورغازی گوٹھ کے درمیان اسماعیلی کمیونٹی کی بس پر فائرنگ سے کم ازکم 43افرادمارے گئے ہیں ۔

عینی شاہدین نے بتایاکہ سیکیورٹی اداروں کی وردی میں ملبوس تین افراد نے بس کو روکا ، بس کے رکتے ہی قریبی عمارت میں روپوش 9افراد آگئے جنہوں نے محاصرہ کرکے تین اطراف سے بس پر فائرنگ شروع کردی ، فائرنگ شروع ہوتے ہی ڈرائیور نے بس بھگانے کی کوشش کی لیکن گولی لگنے کے نتیجے میں زخمی ہوگیا ، بس میں سوار ایک اور شخص نے ڈرائیونگ سیٹ سنبھالی لیکن وہ بھی کامیاب نہ ہوسکا جس کے بعد حملہ آور بس کے اندر گھس گئے ۔

بس پر حملے کی تفصیلی خبر پڑھنے کیلئے یہاں کلک کریں ۔

خیال کیاجارہاہے کہ ابتدائی طورپر ڈرائیور نے یہی سمجھاکہ معمول کی چیکنگ کے لیے روکا جارہاہے جبکہ بتایاگیاہے کہ جائے وقوعہ سے نجی سیکیورٹی کمپنی کی کیپ اور کالعدم تنظیم کے پمفلٹ بھی ملے ہیں, صفورہ چورنگی سے کچھ دور اس علاقے میں آبادی بھی کم ہے ۔

ایس آئی او سچل نے بتایاکہ حملہ آوروں نے بس کی ہرسیٹ پر فائرنگ کی ، بس کے اندر سے ایس ایم جی کی پانچ اور نائن ایم ایم کے 21خول ملے ہیں۔ دوسری طرف تفتیشی حکام نے بتایاکہ پمفلٹ کامقصدتحقیقات کا رخ موڑنے کا ہتھکنڈا ہوسکتاہے ۔

مزید : کراچی