سعودی انجینئرنگ کونسل کا غیر ملکی انجینئروں کے بارے میں اہم فیصلہ

سعودی انجینئرنگ کونسل کا غیر ملکی انجینئروں کے بارے میں اہم فیصلہ
سعودی انجینئرنگ کونسل کا غیر ملکی انجینئروں کے بارے میں اہم فیصلہ

  

جدہ (محمد اکرم اسد / بیورو چیف) سعودی انجینئرنگ کونسل نے واضح کیا ہے کہ غیر ملکی انجینئروں کی رجسٹریشن مملکت آنے اور قیام کے تین ماہ بعد ہی ممکن ہوسکے گی اس سے قبل کسی بھی غیر ملکی انجینئر کی رجسٹریشن نہیں کی جائے گی۔ کونسل کے ترجمان عبدالناصر العبد اللطیف کے مطابق جو غیر ملکی انجینئر آزمائشی مرحلے کے دوران خروج نہائی پر مملکت سے جارہا ہوگا کونسل محکمہ پاسپورٹ کے نام ایک خط جارے کرے گی جس میں تحریر ہوگا کہ یہ غیر ملکی انجینئر ہمارے ہاں رجسٹرڈ نہیں ہے۔ ویسے بھی خروج نہائی کے اجراءکے لئے سعودی انجینئر کونسل میں رجسٹریشن ضروری نہین۔ ترجمان نے توجہ دلائی کہ بعض افراد اور اداروں کی جانب سے اس سلسلے میں بلاوجہ اشکال پیدا کیا جارہا ہے۔

انہوں نے یہ بھی کہا کہ غیر ملکی انجینئرز کی رجسٹریشن کی تین ماہ تک کوئی ضرورت نہیں ہوتی۔ آزمائشی مرحلے کے دوران جب اس کی استعداد ثابت ہوجائے اور انجینئر کو طلب کرنے والا ادارہ اسے اپنے ہاں ملازم رکھنے کا عزم کرلے اقامہ جاری ہوجائے اور وہ باقاعدہ ملازمت کرنے لگے۔ ایسی صورت میں اندراج درج ہوگا۔ غیر ملکی انجینئرز کی اسناد اور تجربات کے سرٹیفکیٹس کی چھان بین ہوگی۔ یہ سارا کام پیشہ وارانہ انداز میں ہوگا، اسناد کی اصلیت معلوم کرنے کے لئے عالمی کمپنی کی خدمات حاصل کی جائیں گی۔ اگرکوئی ڈگری جعلی ثابت ہوئی تو ایسی صورت میں ڈگری پیش کرنے والے کے خلاف کارروائی ہوگی۔ یاد رہے کہ وزارت محنت اور سعودی انجینئرنگ کونسل نے حال ہی میں یہ شرط عائد کی ہے کہ باہر سے ایسا کوئی انجینئر نہ لایا جائے جس کے پاس چار برس سے کم کا تجربہ ہو، اس پابندی سے باقاعدہ طور پر مقیم مستثنیٰ ہوں گے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس