پنجاب کی ماتحت عدالتوں کے 12جج جبری ریٹائرڈ، ایک فارغ،4کے خلاف انضباطی کارروائی کا آغاز، 29کو ترقیاں دے دی گئیں

پنجاب کی ماتحت عدالتوں کے 12جج جبری ریٹائرڈ، ایک فارغ،4کے خلاف انضباطی ...
پنجاب کی ماتحت عدالتوں کے 12جج جبری ریٹائرڈ، ایک فارغ،4کے خلاف انضباطی کارروائی کا آغاز، 29کو ترقیاں دے دی گئیں

  

لاہور(نامہ نگار خصوصی )لاہور ہائی کورٹ نے ماتحت عدالتوں کے 12ججوں کو جبری ریٹائر ، ایک جج کو ملازمت سے برطرف اور4ججوں کے خلاف انضباطی کارروائی شروع کردی ہے ۔چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ مسٹر جسٹس منظور احمد ملک کی سربراہی میں ہونے والے عدالت عالیہ کے انتظامی کمیٹی کے اجلاس میںماتحت عدالتوں کے 29ججوں کو ترقیاں دینے اور6ججوں کے حق میں جاری ہونے والے عدالتی احکامات پر عمل درآمد کی منظوری بھی دی گئی ۔جن ججوں کو پنجاب سول سرونٹس ایکٹ 1974کے سیکشن 12کے تحت جبری ریٹائر کیا گیا ہے ان میں 6ایڈیشنل سیشن جج ،2سینئر سول جج اور3سول جج شامل ہیں ۔جبری ریٹائر کئے جانے والے ایڈیشنل سیشن ججوں میں سے شاہد محمود ۔II،خواجہ محمد اجمل ، ملک نواز سمتیہ ،محبوب احمد خان ،محمد ریاض چوپڑا ، شاہد محمود ۔ Iاورملک ریاض احمد کھوکھر ،سینئر سول ججوں میں کبیر احمداور فیاض احمد ظہیر جبکہ سول ججوں میں سے شوکت علی خان، مجاہد عباس سہیل اور انور علی شامل ہیں ۔کمیٹی نے سول جج شیخ علی جعفر کوضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی ثابت ہونے پر نوکری سے فارغ کردیا ہے جبکہ سینئر سول جج جمیل احمد کھوکھر کو برطرفی کا حتمی شوکاز نوٹس جاری کیا گیا ہے ۔کمیٹی نے مختلف الزامات کے تحت ایڈیشنل سیشن ججز عبدالستار لنگاہ ،طارق جاوید ، رائے محمد نواز اور سول جج مبین راجہ کے خلاف انضباطی کارروائی شروع کرنے کی منظوری دی ۔جن 29ججوں کو ترقیاں (پروفارما پروموشن) دی گئی ہے ان میں 6سیشن جج ،21ایڈیشنل سیشن جج اور2سول جج شامل ہیں ۔سیشن ججز محمد سلیم ،ظفر اللہ تارڑ ،رانا مسعود اختر، محمد اتفاق عباسی ، عابد حسین اور خالد محمود رانجھا،ایڈیشنل سیشن ججز عبدالرزاق ، ضیاءاللہ خان ،ظفر اقبال تارڑ، محمد عاشق ، رانا زاہد اقبال، شاہد سکندر، عدنان مشتاق، جاوید اقبال بوسال ، ارشد حسین ، محمد ظفر اقبال ، محمد عبدالرفیق ،حیدر امین، عبدالرحمن محمد عارف، ظفر یاب انور ، صفدر علی جسراء، ناصر جاوید رانا ،لیاقت علی رانجھا ، شبانہ رسالت عباسی ، ذوالفقار احمد نعیم ، رفاقت علی گوندل اور اصرار زادہ جبکہ سول ججز میں سے شہوار امین واہگہ اور شاذب ڈارکو ترقیاں دینے کی منظوری دی گئی ہے۔عدالت عالیہ کی انتظامی کمیٹی نے سابق سول جج فضل زادہ کو واجب ترقیاں دینے کی درخواست مسترد کردی ۔انتظامی کمیٹی نے ایڈیشنل سیشن جج حاجی احمد کی ایل پی آر منسوخ کرکے انہیں سروس جوائن کرنے کی اجازت دینے سے انکار کردیا۔کمیٹی نے 2ایڈیشنل سیشن اور 2سول ججوں کے خلاف انضباطی کارروائی ختم کردی ان میں محمد عامر حبیب ،مسعود حسین ،سعید احمد اعوان اور یاسر حسین خان شامل ہیں ۔کمیٹی نے ریٹائرڈ سیشن جج طاہر پرویز کودسمبر2001سے 19ویں سے 20ویں گریڈ میں ترقی کی منظوری بھی دے دی ہے۔ماتحت عدلیہ کی ملازمتوں کے سروس ٹربیونل نے سیشن ججزعصمت اللہ خان نیازی ، راﺅ عبدالجبار خان ،محبوب الہیٰ شیخ ،ایڈیشنل سیشن جج مجاہد حسین شیخ ،سول ججز عالم شیراور اکرام الحق چودھری کے حق میں جو فیصلے جاری کئے تھے کمیٹی نے ان پر عمل درآمد کی منظوری بھی دے دی ہے۔

مزید : لاہور