پاکستان عدم مداخلت کی پالیسی پر گامزن، برابری کی بنیادپر خطے میں امن کے خواہاں ہیں: جنرل باجوہ

    پاکستان عدم مداخلت کی پالیسی پر گامزن، برابری کی بنیادپر خطے میں امن کے ...

  

اسلام آباد/تہران (این این آئی،مانیٹرنگ ڈیسک) آرمی چیفجنرل قمر جاوید باجوہ نے واضح کیا کہ پاکستان عدم مداخلت کی پالیسی پر گامزن ہے، پاکستان برابری کی بنیاد پر خطے میں امن و استحکام کے قیام کا خواہاں ہے، پاک ایران سرحد پر چوکیوں کو مزید فعال بنانا ہوگا۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے ایرانی ہم منصب کیساتھ ٹیلیفونک رابطے میں کیا۔آئی ایس پی آر کے مطابق آرمی چیف نے کہا کہ پاکستان نے پاک ایران سرحد پر باڑ کا کام شروع کر دیا،باڑ سے دہشت گردوں اور سمگلروں کی نقل و حرکت روکنے میں مدد ملے گی اور اس مقصد کے حصول کیلئے مشترکہ تعاون کو فروغ دینا ہوگا۔دوسری جانب ایران کی سرکاری خبررساں ایجنسی اسلامک ریپبلک ایجنسی (ارنا) کے مطابق دونوں ممالک کے جنرلوں نے فوجی پیش رفت، سرحدوں کی سکیورٹی اور کورونا وائرس بحران کے حوالے سے بات چیت کی۔ارنا کی رپورٹ کے مطابق جنرل قمر جاوید باجوہ نے مشترکہ سرحدوں پر دہشت گردی کی روک تھام اور سکیورٹی پر زور دیا۔انہوں نے ایرانی جنرل کو حکومت پاکستان کی جانب سے غیر مجاز سرحدی نقل و حرکت کی روک تھام کے لیے اٹھائے گئے اقدامات سے آگاہ کیا۔جنرل باقری نے آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سے بات کرتے ہوئے شر پسندوں کے خلاف تعاون اور دہشت گرد گروہوں کو روکنے اور سرحدوں پر ’مشترکہ دشمنوں‘ کو روکنے کے لیے سرحدوں پر سکیورٹی اقدامات پر زور دیا۔ارنا کی رپورٹ کے مطابق ایرانی آرمی چیف نے جنرل قمر جاوید باجوہ سے کہا کہ ایران کو پاکستانی فوجی حکام کی جانب سے ایرانی سرحدی محافظین کی محفوظ رہائی کیلئے فیصلہ کن اقدامات کرنے کی توقع ہے۔علاوہ ازیں پاکستان میں چینی سفیر یاؤجنگ نے جی ایچ کیو میں پاک فوج کے سربراہ جنرل قمر جاوید باجوہ سے ملاقات کی جس میں باہمی دلچسپی،علاقائی سکیورٹی اور کوروناوباء کے حوالے سے بات چیت کی گئی۔ آئی ایس پی آر کے مطابق چین کے فوری میڈیکل سپلائی کی فراہمی پرآرمی چیف نے اظہارتشکر ادا کیا،آرمی چیف نے چینی میڈیکل ماہرین کی پاکستان آمد اور تعاون کوبھی سراہا۔ ملاقات میں چینی سفیرنے ہرفورم پرپاکستان کی حمایت کی یقین دہانی کرائی۔

آرمی چیف

مزید :

صفحہ اول -