تاریخ میں پہلی مرتبہ چاند رات کو شاپنگ نہیں کرپا ئیں گے

  تاریخ میں پہلی مرتبہ چاند رات کو شاپنگ نہیں کرپا ئیں گے

  

لاہور(سٹاف رپورٹر) کورونا کے پھیلاؤ سے بچنے کے لئے کئے گئے حکومتی اقدامات کے باعث اس امر کا غالب امکان پیدا ہو گیا ہے کہ پاکستان کی تاریخ میں پہلی بار اس مرتبہ کروڑوں شہری چاند رات کی روایتی شاپنگ سے محروم رہ جائیں گے۔29شعبان کو چاند نظر آنے کی صورت میں ہفتے اور 30شعبان کو رویت ہلال کی صورت میں عید شاپنگ نہیں ہو سکے گی کیونکہ پنجاب حکومت نے جمعہ، ہفتہ اور اتوار کو مکمل لاک ڈاؤن اور تمام تجارتی مراکز بند رکھنے کے ایس او پیز بھی جاری کر رکھے ہیں۔عید الفطر اتوار یا پیر کو ہونے کی دونوں صورتوں میں لاک ڈاؤن طریقہ کار کے تحت لوگ قیام پاکستان سے جاری اس روایت کو شہریوں کو با امر مجبوری توڑنا پڑے گا کہ وہ عید کی شاپنگ چاند رات کو کریں ہمارے ہاں یہ مسلسل روایت چلی آ رہی ہے کہ عوام کی اکثریت باالخصوص بچے بچیوں کے ملبوسات جوتے، چوڑیاں اور مہندی وغیرہ چاند رات پر ہی خریدتے ہیں۔ اسی طرح شہر کے چھوٹے بڑے کاروباری مراکز بھی چاند رات پر خصوصی طور پر شب بھر کھلے رہتے ہیں۔ خصوصی نمائشی محرابیں فانوس اور جگمگاتی لائٹیں بھی روشن کی جاتی ہیں لیکن اس مرتبہ شاید یہ رونقیں کورونا کی نذر ہو کر ماند پڑ جائیں یوں سال بھر کمائی کی امید لگائے بیٹھے لاکھوں تاجر بھی عید پر چاند رات پر فروخت کاری نہ کر پائیں گے۔

چاند رات

مزید :

صفحہ اول -