سپریم کورٹ بینچ کا فوجی عدالتوں سے سزا یافتہ ملزموں کی بریت کیخلاف اپیلوں پر سماعت سے انکار

  سپریم کورٹ بینچ کا فوجی عدالتوں سے سزا یافتہ ملزموں کی بریت کیخلاف اپیلوں ...

  

اسلام آباد(سٹاف رپورٹر)سپریم کورٹ میں فوجی عدالتوں سے سزا پانے والے ملزموں کی بریت کیخلاف حکومتی اپیلوں پر سماعت کرنے والے جسٹس مشیر عالم کی سربراہی میں قائم3 رکنی خصوصی بینچ کے رکن ججز جسٹس یحییٰ خان آفریدی اور جسٹس مظہر عالم نے کیس سننے سے انکار کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہم ہائی کورٹ میں مذکورہ کیس سن چکے ہیں۔ جسٹس یحییٰ خان آفریدی نے کہا کہ مناسب نہیں کہ اپنے فیصلوں کے خلاف اپیلوں کو بھی سنیں،کیس میں صرف لارجر بینچ بنانے کا ایشو ہے، عدالت نے نئے بینچ کی تشکیل کیلئے معاملہ چیف جسٹس کو بھجواتے ہوئے کیس کی سماعت نئے بینچ کی تشکیل تک ملتوی کر دی۔ دوران سماعت اٹارنی جنرل نے عدالت کے روبرو موقف اپنایا کہ اس وقت لارجر بینچ سے بھی زیادہ اہم مسئلہ درپیش ہے، کیس میرٹس پر نہیں جا رہے، پشاور ہائیکورٹ نے مقدمات میں حتمی فیصلے تک ملزموں کو ضمانتیں دے دیں تو ایک نیا مسئلہ پیدا ہو جائے گا، جسٹس یحییٰ خان آ فریدی نے اس موقع پر اٹارنی جنرل کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ اگر پشاور ہائیکورٹ کوئی فیصلہ دیتی ہے تو آپ سپریم کورٹ اس کے خلاف آ سکتے ہیں، جس پر اٹارنی جنرل نے موقف اپنایا کہ پشاور ہائیکورٹ کے فیصلے کے بعد اپیل دائر کرکے سارا عمل دوبارہ سے شروع کرنا پڑے گا،عدالت عظمی نے پشاور ہائی کورٹ کو معاملہ پر فیصلہ دینے سے روکتے ہوئے نئے بینچ کی تشکیل کیلنے کیس چیف جسٹس کو بھجواتے ہوئے سماعت ملتوی کر دی ۔

انکار

مزید :

صفحہ اول -