اگر حکومت مجلس عزاء کی اجازت نہیں دیتی تو پھر ردعمل کے لئے تیار ہیں

  اگر حکومت مجلس عزاء کی اجازت نہیں دیتی تو پھر ردعمل کے لئے تیار ہیں

  

کراچی (اسٹاف رپورٹر) شیعہ علماء کونسل پاکستان صوبہ سندھ کے صدر علامہ سید ناظر عباس تقوی نے کہا ہے کہ سندھ حکومت کی جانب سے شہادت امیر المومنین کی مجلس عزا اور جلوس عزاء پر واضح بیان نہ آنا بد نیتی پر منحصر ہے صدر پاکستان اور وزیر اعظم پاکستان و ماہرین طب کے مطابق بنائی جانے والی ایس او پی پر عمل در آمد کرتے ہوئے پورے ملک میں لوک ڈاون میں نر می کی گئی ہے جس میں تجارتی مراکز،ہول سیل مارکیٹیں اور فیکٹریاں کھول دی گئی ہیں اور پیر سے سندھ حکومت نے بھی لوک ڈاون میں نرمی کا اعلان کرتے ہوئے کاروباری سر گر میوں کی اجازت دے دی ہے جس کے بعد شہریوں کا یہ حال ہے کہ مارکیٹوں میں عوام کا سمندر اور شاہراہوں پر گاڑیوں کاسیلاب نظر آرہا ہے پولیس ایس او پی پر عمل کرانے میں ناکام نظر آرہی ہیں شہری آزاد گھوم رہے ہیں لیکن مجلس عزاء کو بند کرنے کے لئے حکومتی مشینری متحرک نظر آتی ہے کرونا کی آڑ میں مجلس عزا و جلوس عزا ء کے خلاف ہونے والی شازشیں نا قابل قبول ہیں گز شتہ کئی مہینوں سے ایسا محسوس ہوتا ہے کہ کرونا مذہب اور اسلام کے خلاف ایک شازش بن کر آیا ہے پاکستان میں یہ وائرس مذہب کے خلاف شازش کا روپ اختیار کرتا جارہا ہے نماز جماعت و جمعہ،نماز تراویح اور مذہبی اجتماعات مجلس عزاء و جلوس عزاء میں کرونا ایکٹیوہوجاتا ہے اور بازاروں و تجارتی مراکز میں کرونا کی بیماری لگنے کا کوئی خدشہ موجود نہیں ہوتا پہلے ایران سے آئے ہوئے زائرین کو نشانہ بنایا گیا اُس کے بعد تبلیغی اجتماع پھر رمضان میں تراویح کے اجتماعات کو نشانہ بنایا گیا اور اب مجلس عزاء و جلوس عزاء کو روکنے کے لئے پورے سندھ میں پولیس عوام پر مجلس عزاء روکنے کے لئے بیجا زور لگا رہی ہے جبکہ عوام ایس او پی کو مدنظر رکھتے ہوئے مجلس عزاء منعقد کرنے کے لئے تیار ہیں ہمیں تو صوبائی حکومت کی بد نیتی اور اس کے ساتھ ساتھ عزاداری کے خلاف شازش کی بُو آرہی ہے لہذا ہم تمام انجمنوں،بانیان مجلس و جلوس سے کہتے ہیں کہ وہ ایس او پی کے مطابق مجلس عزاء منعقد کریں حکومت کی طرف سے مجلس عزاء پر پاپندی اور ایف آئی آرکاٹنے کی دھمکی دی جارہی ہے جس کی وجہ سے عوام میں شدید ردعمل پایا جاتا ہے علماء اور عمائدین ملت نے اس تمام پریشر کا روکا ہوا ہے ہمیں ڈر ہے کہ کہیں انتظامیہ کی طرف سے کوئی ٹکراوں کی صورتحال پیدا کی گئی تو پھر ہم عوام کو کنٹرول نہیں کر پائیں گے اگر حکومت مجلس عزاء کی اجازت نہیں دیتی تو پھر عوامی ردعمل کے لئے تیار رہیں 21رمضان کا جلوس اپنے مقرر وقت پر ایس او پی کے مطابق نکلے گا۔

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -