ٹیچنگ ہسپتال میں بدترین ہنگامہ، 10ڈاکٹرز کیخلاف سخت کارروائی کا حکم

ٹیچنگ ہسپتال میں بدترین ہنگامہ، 10ڈاکٹرز کیخلاف سخت کارروائی کا حکم

  

ڈیرہ غازی خان(سٹی رپورٹر)ٹیچنگ ہسپتال انتظامیہ نے ہسپتال میں مار پیٹ اور بدامنی کے مرتکب دس ڈاکٹرز کے خلاف ملازمت سے برخواستگی،معطلی اور سرکاری رہائش گاہیں خالی کرنے کے لئے سخت کاروائی کا حکم دیدیا تفصیل کے مطابق تین روز قبل9 مئی کو ٹیچنگ ہسپتال ڈیرہ غازی خان میں ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن کے دوگروپوں کے درمیان لڑائی مارپیٹ اور توڑ پھوڑ کا واقعہ ہوا تھا جس پر ایکشن لیتے ہوئے (بقیہ نمبر49صفحہ6پر)

پرنسپل غازی خان میڈیکل کالج ڈاکٹر آصف قریشی اور ایم ایس ٹیچنگ ہاسپٹل ڈاکٹر شاہد حسین مگسی نے سخت انتظامی اقدام کے تحت بدامنی اور مارپیٹ کے مرتکب دس ڈاکٹرز کے خلاف ملازمت سے برخاست کرنے / معطل کرنے اور سرکاری رہائش گاہیں فوری طور پر خالی کرنے کا حکم جاری کردیا۔حکم نامے۔ کے تحت وائی ڈی اے کے صدر ڈاکٹر نعمان چوہدری سمیت مار پیٹ کے مرتکب ڈاکٹر محمد امین،ڈاکٹر عبدالمنان،ڈاکٹر واجد حسین بزدار،ڈاکٹر عمر فاروق،ڈاکٹر ہدایت اللہ،ڈاکٹر آغا شہزاد،ڈاکٹر اویس لغاری،ڈاکٹر عدنان فیض،ڈاکٹر لقمان سمیت دس ڈاکٹرز کے خلاف کاروائی کا حکم دیا ہے اور مذکورہ بالا دس ڈاکٹروں کو سرکاری کوارٹرزبھی 24 گھنٹوں میں خالی کرنے کی ہدایت کی گئی ہے حکم پر عملدرآمد نہ کرنے کی صورت میں انکے خلاف فوری قانونی کارروائی کا بھی کہا گیا ہے اس کاروائی سے ٹیچنگ ہاسپٹل میں انتظامی بہتری اور مریضوں کو علاج معالجے کی بہتر سہولیات دستیاب ہو سکیں گی اور گزشتہ چند ماہ سے مریضوں اور انکے اہل خانہ کو زدوکوب کرنے جیسے واقعات کا بھی خاتمہ ہوگا۔اس سلسلہ میں رابطہ کر نے پر میڈیا فوکل پرسن ڈاکٹر خالد تحسین نے بتایا کہ صدر ینگ ڈاکٹرز ڈاکٹرنعمان چوہدری کو Relieve کے احکامات جبکہ میڈیکل کالج کے اکیڈمک کونسل نے مشترکہ طور پر فیصلہ کر تے ہو ئے مذکورہ ڈاکٹرز کے خلاف کاروائی کر تے ہو ئے مزید احکامات کے لئے سیکرٹری ہیلتھ پنجاب کو تحریری طور پر ارسال کر دیا ہے۔

معطل

مزید :

ملتان صفحہ آخر -