ریکارڈ کمپیوٹرئزائزڈ نہ ہونے سے ریلوے ملازمین شدید مشکلات کا شکار

  ریکارڈ کمپیوٹرئزائزڈ نہ ہونے سے ریلوے ملازمین شدید مشکلات کا شکار

  

ملتان (نمائندہ خصوصی) جدید دور کے تقاضوں سے دور پاکستان ریلوے کے دفاتر اور ملازمین کے سروس ریکارڈ کو اب تک کمپیوٹرائزڈ نہیں کیا جا سکا ہے جس سے ملازمین دوہری مشکلات کا شکار ہو چکے ہیں اس حوالے سے ریلوے ٹریفک یارڈ ایسوسی ایشن کے مرکزی صدر منیر چھٹہ اور مرکزی جنرل سیکرٹری سید شجاعت حسین شاہ نے کہا کہ ریکارڈ کو فوری کمپیوٹرائزڈ کیا جائے کمپیوٹر سافٹ ویئر کے ذریعے ملازمین کو ان کی سروس بک اور ریکارڈ تک آن لائن رسائی دی جائے (بقیہ نمبر28صفحہ6پر)

جسطرح ملازمین کی تنخواہ بینک میں آن لائن کردی گئی ان سے ای میل ایڈریس لے کر ان کی تنخواہوں کی تفصیل ان کے ای میل پر ارسال کی جائیتاکہ ملازمین اپنی تنخواہوں کی تفصیل حاصل کرسکیں،انہوں نے کہا اس عمل سے جہاں ملازمین کو ان کے ریکارڈ تک رسائی آسان ہو جانیگی وہیں ریکارڈ میں ٹیمپرنگ اور کرپشن کا بھی خاتمہ ہوگا جبکہ حیرت انگیز طور پر کم سٹاف میں بہتر کام ہوگا۔انہوں نے مزید کہا کہ اگر آفیسران ای میل یا ریلوے کی ویب سائٹ کے سافٹ ویئر کے ذریعے فائلز ارسال کریں تو نہ صرف کام جلدی مکمل?وگا بلکہ ریکارڈ محفوظ بھی رہے گا اور اس میں ٹیمپرنگ کا کوئی اندیشہ نہ ہوگا،انہوں نے کہا کہ وفاقی وزیر ریلوے شیخ رشید اور چیف ایگزیکٹیو آفیسر جہاں ای ٹکٹنگ اور آن لائن ریزرویشن سمیت دیگر منصوبہ جات میں جدت کے خواہشمند ہیں انہیں ریلوے کے دفاتر کے نظام اور ملازمین کے سروس ریکارڈ کو بھی کمپیوٹرائز کرنے کی طرف تو جہ دینی چاہیے۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -