آرگینک ویلیج لوگوں کو صحت بخش فائدہ پہنچائے گا، مظہرعلی خان

  آرگینک ویلیج لوگوں کو صحت بخش فائدہ پہنچائے گا، مظہرعلی خان

  

  لاہور(سٹی رپورٹر) آرگینک ویلج پاکستان کا واحد سسٹم ہو گاجو امریکن کمپنی کے تعاون سے مکمل کیا جائے گا جہاں سبزیاں،پھل،باغات کھاد خالص آرگینک ہوں گے اور لوگوں کو دو دن کے لئے اس ویلج کی سیر و تفریح اس وجہ سے کروائی جائے گی تا کہ انہیں دو دن میں اندازہ ہو سکے کہ ان کی خریدی گئی یہ زمین انہیں زندگی میں صحت بخش فائدہ پہنچائے گی۔اس کے ساتھ پاکستان میں پیدا ہونے والے ایسے بچوں جن کے والدین معاشی اور مالی تنگی کے باعث اپنے بچے کے لئے دودھ کی فراہمی بھی یقینی نہیں بنا سکتے انہیں اچھی نشو نماء کے لئے خالص دودھ فری مہیا کیا جائے گا،اپنی مدد آپ کے تحت آٹھ افراد کو کھانا کھلانے کی ذمہ داری لی جو آج رمضان المبارک میں دو ہزار اور روزانہ کی بنیاد پر بھی سینکڑوں کی تعداد میں پہنچ چکی ہے یہ کام ہم کر نہیں رہے اللہ کروا رہا ہے ان خیا لات کا اظہار ریئل اسٹیٹ کی دنیا کی معروف شخصیت مظہر علی خان نے روزنامہ ”پاکستان“ کو خصوصی انٹرویو دیتے ہوئے کیا۔ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ ivyکے نام سے شروع ہونے والا پروجیکٹ جو کہ فارم ہاؤس پر مبنی پروجیکٹ ہے اس پروجیکٹ کی خاص بات یہ ہے کہ اس کے ذریعے یہاں بسے لوگوں کو حقیقت اور کائنات کے اتنے قریب لے کر جائیں گے کہ دیکھنے والا محسوس کرے گا کہ حقیقت میں ایک لاجواب پروجیکٹ ہے، ہمارے لئے پیسہ اہم نہیں لوگوں کی آسائش اور آسانی اہم ہے۔دوسرا پروجیکٹ آرگینک ویلج کے نام سے بنایا جا رہا ہے جس کے لئے برکی کے پاس زمین کا انتخاب کر لیا گیا ہے اور امریکن کمپنی کے ساتھ معاہدہ بھی ہو گیا ہے جس کے تحت وہ ہمیں 500گائے اور جدید مشینری مہیا کریں گے تا کہ سبزیاں،پھل،باغات کے لئے پیور کھاد استعمال کی جائیگی۔ یہ پاکستان کا پہلا ایسا پروجیکٹ ہو گا جہاں لوگوں کے لئے اتنی خالص اور صحت بخش خوراک کی فراہمی کو یقینی بنایا جائے گا ۔ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ انشاء اللہ پاکستان کی طرح اگلے سال مکہ اور مدینہ میں لوگوں کو افطاری کروائیں گے۔ان کا مزید کہنا تھا کہ لاہور شہر میں بسنے کی وجہ یہ تھی کہ یہ بڑا شہر ہے بزنس کریں اور بڑھائیں گے۔یہاں آکر احساس ہوا کہ یہ شہر تعصب زدہ زندگی سے پاک،لوگ دوسرے کو خوش آمدید کہہ کر خوش ہوتے ہیں ہمیں اتنا عرصہ ہو گیا ہے آج تک کسی نے ہم سے کچھ نہیں پوچھا میرے ملازموں سے کچھ نہیں پوچھا اور یہ ایک اچھی بات لگی۔ہماری کامیابی کو دیکھ کر بہت سے لوگوں نے ہمارے ساتھ کاروبار کرنے کی آفرزکی لیکن ہم نے ان کے ساتھ کاروبار کرنے کی بجائے خود کرنے میں خیریت جانی۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -