امریکی ایف بی آئی نے غلطی سے 9/11 ہائی جیکر کو مدد کرنے والے سعودی سرکاری آفیسر کا نام بتادیا، نیا ہنگامہ برپا ہوگیا

امریکی ایف بی آئی نے غلطی سے 9/11 ہائی جیکر کو مدد کرنے والے سعودی سرکاری آفیسر ...
امریکی ایف بی آئی نے غلطی سے 9/11 ہائی جیکر کو مدد کرنے والے سعودی سرکاری آفیسر کا نام بتادیا، نیا ہنگامہ برپا ہوگیا

  

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) امریکی ادارے ایف بی آئی نے غلطی سے نائن الیون سانحے کے ہائی جیکر کی مدد کرنے والے سعودی سرکاری افسر کا نام بتا دیا جس سے ایک نیا ہنگامہ برپا ہو گیا ہے۔ یاہو نیوز کے مطابق امریکہ کی فیڈرل کوٹ میں سانحہ نائن الیون کے متاثرین نے ایک مقدمہ دائر کر رکھا ہے،جس میں ایف بی آئی کو فریق بنایا گیا ہے۔ اس مقدمے میں ایف بی آئی کا ایک سینئر عہدیدار عدالت میں پیش ہوا اور ڈکلیریشن فائل کیا۔ اس ڈکلیریشن میں غلطی سے اس سعودی عہدیدار کا نام بھی لکھ دیا گیا تھا۔

رپورٹ کے مطابق یہ سعودی عہدیدار واشنگٹن میں سعودی عرب کے سفارتخانے میں تعینات تھا جس کے متعلق ایف بی آئی اور دیگر امریکی اداروں کو شبہ ہے کہ اس نے نائن الیون کے دو ہائی جیکرز کی معاونت کی۔ اس کیس کے فریق متاثرہ خاندانوں کے ترجمان بریٹ ایگلسن کا کہنا تھا کہ ”یہ کیس طویل عرصے سے چل رہا ہے اور اب اس میں ایک بڑا بریک تھرو ہوا ہے۔ اگرچہ یہ ایف بی آئی سے انجانے میں ہوا لیکن اتنا معلوم ہو گیا ہے کہ ایف بی آئی اپنی انویسٹی گیشن میں ہائی جیکرز اور سعودی سفارتخانے کے درمیان لنک تلاش کر چکاہے۔اس سے یہ بھی طشت از بام ہو گیا ہے کہ امریکی حکام سانحہ نائن الیون میں سعودی حکام کے ملوث ہونے کے معاملے پر پردہ ڈالتے آ رہے ہیں۔“

مزید :

بین الاقوامی -