آسٹریلوی کاروباری شخصیت اور معروف کھلاڑی گریگ نورمن کا ترکی میں قتل ہونے والے سعودی صحافی جمال خاشقجی سے متعلق ایسا بیان کہ ہنگامہ برپا ہوگیا

آسٹریلوی کاروباری شخصیت اور معروف کھلاڑی گریگ نورمن کا ترکی میں قتل ہونے ...
آسٹریلوی کاروباری شخصیت اور معروف کھلاڑی گریگ نورمن کا ترکی میں قتل ہونے والے سعودی صحافی جمال خاشقجی سے متعلق ایسا بیان کہ ہنگامہ برپا ہوگیا
سورس: Wikimedia Commons

  

کنبرا(مانیٹرنگ ڈیسک) آسٹریلیا کے کاروباری شخص اور گولف کے معروف کھلاڑی گریگ نورمن نے چند سال قبل ترکی میں واقع سعودی سفارتخانے میں قتل ہونے والے صحافی جمال خاشقجی کے متعلق ایسا غیرذمہ دارانہ بیان دے ڈالا ہے کہ جمال خاشقجی کی منگیتر اور انسانی حقوق کے کارکن سراپا احتجاج ہو گئے۔ میل آن لائن کے مطابق گریگ نورمن نے اپنے ایک حالیہ انٹرویو میں کہا تھا کہ ”دیکھیں، ہم سب سے غلطیاں ہوتی ہیں اور ہم ان غلطیوں سے سیکھتے ہیں۔ “

گریگ نورمن کے اس بیان پر جمال خاشقجی کی منگیتر خدیجہ چنگیز نے اپنے ٹوئٹر اکاﺅنٹ کے ذریعے کہا ہے کہ ”انسان کو دولت کے لالچ میں اس قدر اندھا نہیں ہونا چاہیے کہ وہ ایسے سفاکانہ قتل کی حمایت کرنے پر مجبور ہو جائے۔ “ رپورٹ کے مطابق گریگ نورمن کی کمپنی لائیو گولف انویسٹمنٹس میں زیادہ تر سرمایہ کاری سعودی عرب کے حکومتی ادارے پبلک انویسٹمنٹ فنڈ کی طرف سے کی گئی ہے۔ اسی کی طرف اشارہ کرتے ہوئے خدیجہ چنگیز نے گریگ کو دولت کا لالچی قرار دیا اور کہا کہ وہ سعودی عرب سے اپنی کمپنی کو ملنے والے پیسوں کی وجہ سے ان کی ناحق حمایت کررہے ہیں۔

مزید :

کھیل -