ترکش ائر لائن

ترکش ائر لائن
ترکش ائر لائن

  

                                    ترکش ایئر لائن اپنی براہ راست پروازوں کا آغاز استنبول سے لاہور اور لاہور سے استنبول 27 نومبر 2013ءکو کررہی ہے۔یہ ایک تاریخی آغاز سفر ہے۔ ترکش ایئر لائن کی پہلی پرواز 27نومبر کو استنبول سے اُڑے گی اور 28نومبر کو لاہور پہنچے گی اور لاہور سے ترکش ایئر لائن کا پہلا جہاز 29نومبر کواُڑے گا اور براہِ راست استنبول پہنچے گا۔توقع کی جارہی ہے کہ ترک ایئر لائن کی ان پروازوں کے آغاز سے دونوں ملکوں اور عوام کے درمیان تعلقات کو مزید وسعت ملے گی اور فاصلے کم ہو کر سمٹیں گے۔لاہور سے استنبول اور استنبول سے لاہور پرواز کا کل وقت ساڑھے پانچ گھنٹے ہوگا۔ پہلی ترک ایئر لائن کی پرواز کا تاریخی استقبال ہوگا۔ترک ایئر لائن اپنا رابطہ دفتر بھی لاہور میں کھول رہی ہے۔ایئر لائن کی سروسز اور معیار بہتر ہوگا اور پاکستان سے ترکی اور ترکی سے پاکستان آنے جانے اور سفری سہولتوں کا ایک اچھا اور مضبوط آغاز ہوگا۔

ترکش ایئر لائن کا شمار دنیا کی بہترین ایئر لائنز میں ہوتا ہے ، اسے 2012ءمیں سکائی ریکس ورلڈ ایئر ایوارڈ سے بھی نوازا گیا ہے۔ ترکش ایئر لائن کو یورپ کی بہترین ایئر لائن ہونے کا بھی اعزاز مل چکا ہے۔ترکش ایئر لائن ایک خود کفیل ادارہ ہے اور بہت سا زرمبادلہ کماتا ہے اور مضبوط منافع بخش ادارہ بن چکا ہے۔یہ ایئر لائن مانچسٹر یونائیٹڈ فٹ بال کلب سمیت یورپ کے دیگر مشہور فٹ بال کلب کے آفیشل سپانسرز اور ایئر لائن کا اعزاز بھی رکھتی ہے۔یورپ، امریکہ سمیت دیگر ممالک کے لوگ ترک ایئر لائنز سے سفر کو ترجیح دیتے ہیں۔ہماری قومی ایئر لائن پی آئی اے ترکش ایئر لائن کی کامیابی سے بہت کچھ سیکھ سکتی ہے جو اپنے نظام، معیار ،سہولیات، آپریشن، ورکنگ اور پروفیشنلزم میں یورپ کو بھی پیچھے چھوڑ چکی ہے اور دنیا کے تقریباً ہر کونے میں اپنی پروازوں کے ذریعے کروڑوں لوگوں کی پسندیدہ ایئر لائن بن چکی ہے۔

پاکستان اور ترکی کے تعلقات بلندیوں کو چھونے لگے ہیں۔بہت سی ترک کمپنیاں بڑی کامیابی سے پاکستان میں اپنا کاروبار چلا رہی ہیں اور ان کا تجربہ بڑا خوشگوار رہا ہے۔ترک ڈراموں نے عوام میں ترکی کو اور مقبول کردیا ہے۔حکومتی سطح پر خاص طور پر میاں شہبازشریف کی اس سلسلے میں کوششیں بھی قابل تحسین ہیں ۔ترکش ایئر لائنز کے لاہور سے آغاز کے بعد ان تعلقات کو مزید وسعت ملے گی۔امید کی جانی چاہئے کہ ترک سرمایہ کار، تاجر اور کاروباری برادری یہاں اپنا کاروبار اور مزید سرمایہ لگائے گی۔ترکش پروازوں سے پاکستانی تاجروں کو اپنی مصنوعات جہاں ترکی تک متعارف کرنے اور بھیجنے کا موقع ملے گا،وہاں انہیں ترکی سے یورپ اپنی تجارت اور مصنوعات کو وسعت دینے کا بھی سنہری موقع ملے گا۔پاکستانی تاجر ترکی سے جرمنی، پھر پورے یورپ کو اپنی مصنوعات بھجوا سکتے ہیں۔ ترکی میں اپنے دفتر اور کمپنیاں کھول سکتے ہیں اور ان پروازوں سے بھرپور فائدہ اٹھا سکتے ہیں۔ امید ہے کہ استنبول سے لاہور اور لاہور سے استنبول تک براہ راست ترکش ایئر لائن کی پروازوں کے آغاز سے ترقی اور خوشحالی کا ایک نیا دور شروع ہوگا، جس کا فائدہ سب کو ہے۔   ٭

مزید :

کالم -