دنیا کا وہ ملک جہاں مرد سب سے زیادہ تنہائی کا شکار ہیں

دنیا کا وہ ملک جہاں مرد سب سے زیادہ تنہائی کا شکار ہیں
دنیا کا وہ ملک جہاں مرد سب سے زیادہ تنہائی کا شکار ہیں

  

بیجنگ(نیوز ڈیسک)اگر آپ اب تک محبت سے محروم ہونے کی وجہ سے رنجیدہ خاطر ہیں تو یہ سوچیں کہ دنیا میں ایک ملک ایسا بھی ہے جہاں تنہا مردوں کی سب سے بڑی تعداد پائی جاتی ہے اور کل مردوں میں سے 94فیصد شادی کی نعمت کو ترستے پھرتے ہیں۔یہ ملک ہمارا ہمسایہ اور دوست چین ہے جہاں مردوں کی تعداد بہت بڑھ گئی ہے لیکن خواتین کم کم ملتی ہیں۔سماجی تحقیقات اور سروے ظاہر کرتے ہیں کہ 2011میں چین میں مردوں کی تعداد خواتین سے ساڑھے تین کروڑ زیادہ تھی۔اب آپ کو تصور کیجیے کہ جس ملک میں کروڑوں خواتین کی کمی ہو وہاں مردوں کے لیے جیون ساتھی کی تلاش کس قدر مشکل ہو گی۔دنیا میں پیدا ہونے والے لڑکوں کی تعداد عام طور پر لڑکیوں کی نسبت تقریباً5فیصد زیادہ ہوتی ہے لیکن چین میں یہ فرق 16فیصد ہے ۔ماہرین کے مطابق اس کی وجہ چین میں ایک بچے سے زائد کی اجازت نہ ہونا اور لڑکیوں پر لڑکوں کو ترجیح دینے کی روایت ہے ۔اب صورتحال یہ ہو چکی ہے کہ ہر طرف مرد ایک دوسرے کے ساتھ ٹکراتے پھرتے ہیں اور خواتین نایاب ہوتی جا رہی ہیں۔اکثر بڑے شہروں میں والدین کنواروں کے لیے بنائی گئی منڈیوں میں لگے اشتہارات دیکھتے پائے گئے ہیں تاکہ وہ اپنے بیٹوں کے لیے کوئی مناسب دلہن ڈھونڈ سکیں۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -