درآمد شدہ گاڑیوں پر لگژری ٹیکس سے کاروبار تباہ ، بیروزگار ی میں اضافہ ہو گا : ملک سہیل احمد

درآمد شدہ گاڑیوں پر لگژری ٹیکس سے کاروبار تباہ ، بیروزگار ی میں اضافہ ہو گا : ...

  

لاہور(اسد اقبال ۔تصاویر علی رضا)فیڈرل بورڈ آف ریو نیو کی جانب سے گاڑیوں پر ریگو لیٹری ڈیوٹی کی شر ح میں اضافہ اور پنجاب حکومت کی جانب سے ایمپورٹڈ گاڑیوں پر لگژری ٹیکس عائد کر نے کے بعد کار ڈیلرز کا کاروبار تباہ جبکہ مارکیٹوں میں ہو کا عالم ہونے سے کئی ایک کار ڈیلرز نے کاروبار کو تالے لگا دیے ہیں جس سے سینکڑوں ملازمین بے روزگار جبکہ موٹر رجسٹریشن ریونیو کا گراف نیچے گر گیا ہے ۔حکومت سے مطالبہ ہے کہ ریگو لیٹری ڈیوٹی کو ختم کر تے ہوئے لگژری ٹیکس کو موخر کیا جائے ۔واضح رہے کہ لاہور سمیت پنجاب بھر کے کار ڈیلرز پرانی گاڑیوں پرعائد بے جا ٹیکسز کے خلاف سخت لائحہ عمل تیار کر تے ہوئے سراپا احتجاج بنیں گے ان خیالات کا اظہار جیل روڈ کار ڈیلرز فیڈریشن کے رہنماء ملک سہیل احمد نے پاکستان فورم میں اظہار خیال کر تے ہوئے کیا ۔ ملک سہیل احمد کا کہنا تھا کہ ایف بی آر کی جانب سے 1000سی سی اور1300سی سی گاڑیوں پر عائد ریگو لیٹری ڈیو ٹی کی شر ح میں اضافہ کار ڈیلرز کا معاشی قتل کرنے کے مترادف ہے ۔ انہوں نے کہا کہ درآمدی گاڑیوں پر ریگولیٹری ڈیوٹی عائد کر نے سے چھوٹی گاڑیاں بھی صارفین کی پہنچ سے باہر ہو جائیں گی جبکہ ہمارے کاروبار پر منفی اثرات مرتب ہو نگے ۔ دوسری جانب پنجاب میں ایمپورٹڈ گاڑیوں پر لگژری ٹیکس عائد کیے جانے کے باعث لاہور سمیت بڑے شہروں کے شہری اسلام آباد میں جاکر گاڑیاں رجسٹرڈ کروا رہے ہیں کیو نکہ پنجاب حکومت کی جانب سے ایمپورٹڈ گاڑی پر لگژری ٹیکس کی مد میں 4لاکھ روپے تک اضافہ کر دیا ہے جس سے صارفین میں تشویش کی لہر پائی جارہی ہے۔انہوں نے کہا کہ ریگو لیٹری ڈیو ٹی کے نفاذ سے ملک میں مہنگائی کا ایک نیا طوفان آئے گا جس سے اشیاء کی قیمتیں مہنگی اور عام آدمی کی پہنچ سے باہر ہونگی ۔

کار ڈیلرز

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -