کاہنہ : نامعلوم افراد کے ہاتھوں 45سالہ شخص تشدد کے بعد قتل ، لاش نالہ سے برآمد

کاہنہ : نامعلوم افراد کے ہاتھوں 45سالہ شخص تشدد کے بعد قتل ، لاش نالہ سے برآمد

  

لاہور(خبرنگار) کاہنہ کے علاقہ میں نامعلوم افراد نے 45 سالہ شخص کو تشدد کر کے موت کے گھاٹ اتار دیا اورلاش نالہ میں بہا دی۔ پولیس نالہ میں تیرتی ہوئی نعش قبضہ میں لے کر مردہ خانہ میں جمع کروا دی۔دو روز قبل ایک خاتون کی بھی تشدد زدہ نعش سے برآمد ہوئی تھی۔ رواں سال کے دوران کاہنہ کی حدود سے لاہور میں داخل ہونے والے اس نالہ سے 25 سے زائد مرد اور خواتین کی نعشیں برآمد ہو چکی ہیں۔ بتایا گیا ہے کہ کاہنہ پولیس کو اطلاع ملی کہ نالہ میں ایک 45 سالہ شخص کی نعش تیر رہی ہے جس پر پولیس نے موقع پر پہنچ کر نعش قبضہ میں لے کر معائنہ کیا تو مقتول کے جسم پر تشدد کے نشانات تھے۔ پولیس کے مطابق مقتول کو تشدد کا نشانہ بنانے کے بعد قتل کر کے نعش نالہ میں بہا دی گئی جو کہ للیانی قصور کے علاقہ سے نالہ میں تیرتی ہوئی آئی ہے۔ پولیس کے مطابق مقتول کی شناخت نہیں ہو سکی ہے۔ نعش قبضہ میں لے کر مردہ خانہ میں جمع کروا دی گئی ہے۔ ایس ایچ او چودھری اشتیاق کے مطابق بظاہر ایسا معلوم ہو رہا ہے کہ مقتول کو دیرینہ عداوت پر موت کے گھاٹ اتارا گیا ہے تاہم اصل حقائق پوسٹمارٹم رپورٹ اور مقتول کے ورثاء کے سامنے آنے پر معلوم ہو سکیں گے۔ یاد رہے کہ دو روز قبل بھی اسی نالہ سے ایک خاتون کی تشدد زدہ نعش برآمد ہوئی تھی جس کی تاحال شناخت نہیں ہو سکی ہے۔جبکہ چند روز قبل ایک 40 سالہ شخص کی نعش بھی اسی نالہ سے برآمد ہوئی تھی۔ اسی طرح 20 روز قبل ایک رکشہ ڈرائیور کی نعش بھی سی آئی اے ماڈل ٹاؤن نے اسی نالہ سے برآمد کی تھی جس نے ایک خاتون کو قتل کر کے نالہ میں پھینکا تھا اور بعد میں اسے بھی قتل کر کے اسی نالہ میں بہا دیا گیا تھا۔ پولیس کے مطابق للیانی قصور سے آنے والا یہ نالہ جو کہ تھانہ کاہنہ ، تھانہ نشتر اور تھانہ کوٹ لکھپت کی حدود سے گزرتی ہے ۔ اب تک اس نالہ سے 25 سے 30 مردو خواتین کی نعشیں برآمد ہو چکی ہیں جن میں سے بیشتر کی شناخت نہیں ہو سکی ہے۔ جنہیں مختلف واقعات کے دوران دیرینہ عداوت اور غیرت کے نام پر قتل کیا گیا۔

Back

مزید :

علاقائی -