ماڈل ٹاؤن ڈویژن میں رواں سال کے دوران قتل وغارت سمیت سنگین جرائم میں کمی واقع ہوئی

ماڈل ٹاؤن ڈویژن میں رواں سال کے دوران قتل وغارت سمیت سنگین جرائم میں کمی واقع ...

  

لاہور(خبر نگار) ماڈل ٹاؤن ڈویژن میں شہر کی دیگر پولیس ڈویژنوں کی نسبت رواں سال کے دوران قتل و غارت سمیت سنگین جرائم میں کمی واقع ہوئی ہے۔ ماڈل ٹاؤن ڈویژن کی پولیس نے رواں سال کے دوران 356خطرناک ڈاکوؤں اور 266اشتہاری ملزمان کو گرفتار کیا اور ڈاکوؤں سے پونے تین کروڑ روپے کی ریکوری کی ہے۔ ایس پی ماڈل ٹاؤن(آپریشن) حسنین حیدر نے ’’پاکستان‘‘ کو بتایا کہ سی سی پی او لاہور کیپٹن (ر) محمد امین وینس کی ہدایت پر ڈی آئی جی ڈاکٹر حیدر اشرف کی نگرانی میں ماڈل ٹاؤن ڈویژن میں قتل و غارت، ڈکیتی اور رابری جیسے سنگین واقعات کی روک تھام کے لیے موثر منصوبہ بندی اور حکمت عملی سے کام لیا جارہا ہے جس کے تحت تھانوں کی سطح پر پٹرولنگ اور مشکوک افراد پر کڑی نظر اور نگرانی کے لئے ایس ایچ اوز کے ساتھ ساتھ سادہ کپڑوں میں خصوصی ٹیمیں تشکیل دی گئی ہیں جبکہ پرانی دشمن داروں کے وارنٹ طلبی تیار کرکے انھیں جیلوں میں بند یا پھر ڈویژن سے بھگا دیا گیا ہے۔ اس امر کا واضح ثبوت ہے کہ سال 2016ء کے پہلے 10ماہ میں قتل کے 63واقعات پیش آئے اور بہتر منصوبہ بندی سے سال 2017ء کے 317دنوں میں اب تک قتل کے 41واقعات پیش آئے ہیں جوکہ گذشتہ سال کی نسبت 413 کم ہیں، اسی طرح ڈکیتی اور راہزنی کے واقعات کی روک تھام کے لئے تھانوں کی سطح پر بہتر ہولڈنگ اور ڈولفن سمیت پیرو سکواڈ کی گشت اور مشکوک افراد کی کڑی نگرانی سے رواں سال کے دوران گذشتہ سال کی نسبت 50فیصد واقعات میں کمی کرنے میں کامیابیاں حاصل کی ہے۔ گذشتہ سال ڈکیتی اور راہزنی کے 511واقعات رجسٹرڈ ہوئے اور رواں سال کے دوران اب تک 278 واقعات پیش آئے ہیں۔ گاڑیوں کی چوری اور چھیننے کے گذشتہ سال 652جبکہ رواں سال کے دوران اب تک 584واقعات ریکارڈ کیے گئے ہیں۔سال 2016میں سنگین واقعات 1510اور رواں سال 1097واقعات پیش آئے ہیں جبکہ ڈاکوؤں اور خطرناک قسم کے اشتہاریوں کے خلاف کریک ڈاؤن کرتے ہوئے 356ڈاکوؤں اور 266اشتہاریوں کو گرفتار اور ڈاکوؤں سے پونے تین کروڑ روپے مالیت کی نقدی، زیورات، موبائل فون اور گاڑیوں سمیت دیگر مال و سامان برآمد کیا گیا ہے۔ اس کے ساتھ جرائم پیشہ افراد کے خلاف کریک ڈاؤن جاری رکھ کر نیشنل ایکشن پلان کے تحت کاروائی کرکے 713 ملزمان سے جدید اسلحہ برآمد کیا گیا ہے جبکہ کرائے داری ،قبضہ گروپ اور گداگری ایکٹ کے تحت کارروائی کرتے ہوئے 1239ملزمان گرفتار کئے گئے ہیں اور 1346ملزمان کو گرفتار کرکے اُن کے قبضہ سے لاکھوں روپے مالیت کی منشیات برآمد کی گئی ہے۔ پتنگ بازی کے خلاف موثر کاروائی کرتے ہوئے 175پتنگ بازوں کو گرفتار کیا گیا ہے۔ ایس پی حسنین حیدر نے مزید بتایا کہ انہوں نے تعیناتی کے بعد سے اب تک قتل و غارت اور ڈکیتی جیسے سنگین واقعات کی جانب خصوصی توجہ دی جس سے سنگین واقعات میں 50فیصد کمی واقع ہوئی ہے جبکہ اپنے دفتر میں شہریوں کے مسائل سننے اور بروقت حل کرنے سے پولیس اور شہریوں کے درمیان تعلقات اور اعتماد میں بہتری آئی، جسے آئی جی پولیس اور سی سی پی او نے باقاعدہ سراہا ہے۔

مزید :

صفحہ آخر -