کشمیر کی آزادی، عقیدہ ختم نبوت کے تحفظ کیلئے تحریک چلائیں گے: مذہبی و سیاسی رہنما

کشمیر کی آزادی، عقیدہ ختم نبوت کے تحفظ کیلئے تحریک چلائیں گے: مذہبی و سیاسی ...

  

بہاولپور(ڈسٹرکٹ رپورٹر)مذہبی و سیاسی جماعتوں کے رہنماؤں نے کہا ہے کہ عقیدہ ختم نبوت میں ترمیم کے ذمہ داروں کو بے نقاب کر کے عبرتناک سزا دی جائے۔حرمت رسول ﷺ پر جان بھی قربان ہے، ہر مسلمان کا نعرہ ہے۔پاکستان جن مسائل کا شکار ہے ان کا حل سیر ت النبی ﷺ پر عمل سے ہی ممکن ہے۔ عقیدہ ختم نبوت کا تحفظ کسی مسلک کا نہیں بلکہ پوری امت مسلمہ کامسئلہ ہے۔پاکستانی قوم نبی (بقیہ نمبر13صفحہ12پر )

کریم ﷺ کی حرمت کے تحفظ کیلئے جانیں قربان کرنے کیلئے تیار ہے۔آج کا پاکستان مسلم دنیا کے دفاع کیلئے کردار ادا کر رہا ہے۔کشمیر کی آزاد ی ، نئی نسل کی تہذیب کی حفاظت اورعقیدہ ختم نبوت کے تحفظ کیلئے تحریک چلائیں گے۔نیب کی جگہ بھارتی طرز کا احتساب کمیشن لایا گیا تو قبول نہیں کرینگے۔جماعۃ الدعوۃ کے سربراہ حافظ محمد سعید کو فوری رہا کیا جائے۔کشمیری تکمیل پاکستان کی جنگ لڑ رہے ہیں۔حکمرانوں نے نااہل کیلئے قانون بنا لیا لیکن کشمیر کے مسئلہ پر خاموش ہیں۔وطن عزیز نظریہ پاکستان کی بنیاد پر حاصل کیا گیا ملک ہے۔خدمت کی سیاست سے سیاسی منظرنامہ بدلے گا۔ان خیالات کا اظہار پروفیسر حافظ عبدالرحمن مکی،لیاقت بلوچ،محمدعلی درانی،محمد یعقوب شیخ،سیف اللہ خالد،سید کفیل شاہ بخاری،حافظ عبدالرؤف،سید عبدالوحید شاہ،شیخ وقاص احمد،قاری عبدالغنی ثاقب،اقبال دانش نے جامعہ عمر بن عبدالعزیز میں سالانہ سیرت النبی کانفرنس بسلسلہ ختم نبوت و تقریب تقسیم انعامات سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔کانفرنس میں کثیر تعداد میں مختلف مکاتب فکر سے تعلق رکھنے والے افراد نے کثیر تعداد میں شرکت کی۔اس موقع پر سیکورٹی کے سخت انتظامات کئے گئے تھے۔شرکاء کو جامہ تلاشی کے بعد پنڈال میں جانے کی اجازت دی گئی۔جامعہ عمر بن عبدالعزیز سے امسال 13طلبا نے حفظ قرآن مجید مکمل کیا جبکہ 6طلباء نے قرات مکمل کی۔مہمان خصوصی پروفیسر حافظ عبدالرحمن مکی،لیاقت بلوچ،محمد علی درانی نے حفظ،تجوید مکمل کرنے والے طلبا اور درس نظامی میں پوزیشن حاصل کرنے والے طلبا میں انعامات،سرٹفکیٹ ،کتب اور نقد رقوم تقسیم کیں۔اس موقع پر ارشد بخاری ایڈوکیٹ،محمد سلمان فاروقی،محمد ابوہریرہ،میاں سہیل احمد و دیگر بھی موجود تھے۔جماعۃ الدعوۃ شعبہ سیاسی امور کے سربراہ حافظ عبدالرحمن مکی نے کہا کہ انگریز نے قادیانی کا فتنہ کھڑا کیا جو پاکستان میں پھیل گیا۔قادیانیوں کو کافر قرار دیا گیا تو اسمبلی سے طے ہوا اور آئین کا حصہ بنا۔مرزائی غیر مسلم اقلیت قرار دیئے گئے۔عباسی نواب نے قادیانیوں کو بہاولپور میں رہنے،نوکری کرنے،جائیداد خریدنے کا حق نہیں دیا تھا اور اعلان کیا تھا کہ کوئی بھی مرزائی بہاولپور نہیں آئے گا۔انہوں نے کہا کہ موجو دہ حکمرانوں نے آئین کی شق62,63بدلنے کی کوشش کہ تا کہ صادق و امین قیادت سامنے نہ آ سکے۔عقیدہ ختم نبوت پر وار کیا گیا جس پر سب سے پہلے شیخ رشید احمد نے آواز بلند کی۔نواز شریف نے ملک کو لبرل ازم کی جانب لے جانے کی کوشش کی لیکن ناکام ہوا۔اب نیب کی جگہ بھارتی طرز کا احتساب کمیشن بنانے کی بات ہو رہی ہے۔نیب کو چھیڑا گیا تو تحریک چلائیں گے۔انہوں نے کہا کہ عقیدہ ختم نبوت پر جو وار کیا گیا ہم نے اس پر حق ادا نہیں کیا۔ایک بھر پور تحریک چلانے کی ضرورت ہے۔ہم اعلان کرتے ہیں کہ نظریہ پاکستان سے کھلواڑ کی کوئی جرات نہ کرے۔افواج پاکستان،دفاع پاکستان کے خلاف کوئی زبان کھولنے کی جرات نہ کرے۔اگر ایسا کیا گیا تو بھر پور تحریک چلائیں گے۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -