گدو پاور منصوبہ میں 1.93ارب کرپشن کی تحقیقات کیلئے کمیٹی تشکیل

گدو پاور منصوبہ میں 1.93ارب کرپشن کی تحقیقات کیلئے کمیٹی تشکیل

  

اسلام آباد (آن لائن) توانائی نے گدو پاور پلانٹ میں مبینہ1ارب 93کروڑ کرپشن اور مالی بدعنوانی کی تحقیقات شروع کردی ہیں اور تحقیقات وزارت پاور کے ایڈیشنل سیکرٹری کی سربراہی میں اعلیٰ اختیارات کی حامل تحقیقاتی کمیٹی تشکیل دیدی گئی ہے گدوپاور منصوبے میں مالی بدعنوانی اس وقت سامنے آئی تھی جب خواجہ آصف وزیر توانائی تھے ،وزارت کے باخبر ذرائع نے بتایا ہے گدو پاور منصوبے کی تعمیر میں مصروف ایک بڑی کمیٹی کو نواز شریف حکومت کے وزیر پانی بجلی اور سیکرٹری پانی و بجلی نے قیمتوں میں اضافہ کا سہارا لے کر 1ارب 93زائد روپے جاری کردیے تھے جب حکومت تبدیل ہوئی ہے تو نئے سیکرٹری توانائی کے اس بھاری مالی بدعنوانی کا نوٹس لیا ہے اور اعلیٰ پیمانے پر تحقیقات کیلئے ایڈیشنل سیکرٹری کی سربراہی میں کمیٹی تشکیل دے دی ہے ۔ذرائع نے بتایا ہے ایڈیشنل سیکرٹری شدید دباؤ میں ہیں اور تحقیقا ت کو منصفانہ بنیادوں اور شفاف طریقے سے مکمل کرنا ان کی بس کی بات نہیں ہے، کرپشن اور مالی بدعنوانی کا معاملہ ہے جس کی منصفانہ تحقیقات نیب اور ایف آئی اے کے سوا کوئی دوسرا ادارہ کرنے کا اہل نہیں۔

گدو منصوبہ کرپشن

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -