ہندو شخص نے فیس بک پر ایسی گستاخانہ بات لکھ دی کہ 20 ہزار مسلمانوں نے گاﺅں کا محاصرہ کرلیا اور پھر۔۔۔ انتہائی خطرناک خبر آگئی

ہندو شخص نے فیس بک پر ایسی گستاخانہ بات لکھ دی کہ 20 ہزار مسلمانوں نے گاﺅں کا ...
ہندو شخص نے فیس بک پر ایسی گستاخانہ بات لکھ دی کہ 20 ہزار مسلمانوں نے گاﺅں کا محاصرہ کرلیا اور پھر۔۔۔ انتہائی خطرناک خبر آگئی

  

ڈھاکہ(مانیٹرنگ ڈیسک)اسلام ہمیں ہر مذہب کے احترام کی تعلیم دیتا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ مسلمانوں کی طرف سے کسی دوسرے مذہب یا ان کے مقدسات کی توہین کے واقعات نہ ہونے کے برابر ہیں۔ تاہم غیرمسلم اسلامی شعار اور ہماری مقدس ہستیوں کے خلاف ہرزہ سرائی سے باز نہیں آتے۔ اب ایسی ہی ہرزہ سرائی کا نیا واقعہ بنگلہ دیش میں رونما ہوا ہے جہاں ایک ہندو شخص نے مبینہ طور پر فیس بک پر رسول عربیﷺ کی شان میں گستاخی کی جس پر آس پڑوس کے کئی دیہات سے 20ہزار سے زائد مسلمانوں نے اس شخص کے گاﺅں پر دھاوا بول دیا اور گھروں کو آگ لگا دی۔

سب سے پہلے کون سا کپ بھرے گا؟ لڑکی کا ایک سوال جس نے سوشل میڈیا صارفین کو چکرا کر رکھ دیا، آپ بھی درست جواب جانئے

اس سے قبل کہ پولیس جائے وقوعہ پر پہنچتی مشتعل مظاہرین 20سے زائد گھروں کو آگ لگا چکے تھے۔ پولیس نے موقع پر پہنچ کر مظاہرین کو منتشر کرنے کے لیے پلاسٹک کی گولیوں اور آنسو گیس کا استعمال کیا۔ ان فسادات میں ایک شخص ہلاک اوردرجنوں زخمی ہو گئے۔رپورٹ کے مطابق اس ہندو شخص کا تعلق رنگ پور صدر علاقے کے گاﺅں ٹھاکربری سے تھا۔ واقعے میں ہلاک ہونے والا شخص مسلمان تھا جس کا نام حمید الاسلام تھا۔ اس کی ہلاکت کے بعد مشتعل لوگوں نے پولیس کے خلاف احتجاج شروع کر دیا اور دھرنا دے کر رنگ پور، دیناج پور ہائی وے بلاک کر دی۔

مزید :

بین الاقوامی -