سموگ جان لیوا مرض،شہری احتیاطی تدابیر اپنائیں، ڈاکٹر خواجہ محبوب

سموگ جان لیوا مرض،شہری احتیاطی تدابیر اپنائیں، ڈاکٹر خواجہ محبوب

  

لاہور(سٹی رپورٹر) ہے پاکستان میں بارشیں نہ ہونے کی وجہ سے سموگ پھیل رہی جوکہ آنکھوں میں جلن کا باعث بننے کے ساتھ ساتھ سانس اور پھیپھڑوں میں بیماری کا سبب بن رہی ہے۔ سموگ نہ صرف انسانوں بلکہ جانوروں اور پودوں کوبھی نقصان پہنچاتی ہے ان خیالات کا اظہار میڈیکل سپرنٹنڈنٹ لیڈی ولنگٹن ہسپتال ڈاکٹر خواجہ محبوب احمد نے انسداد سموگ کے حوالے سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کیا ہے۔ایم ایس ڈاکٹر خواجہ محبوب نے کہا کہ سموگ میں زیادہ وقت گزرنے سے بہت سے طبی مسائل پیدا ہو سکتے ہیں۔ سموگ سے بچنے کے لئے احتیاطی طبی تدابیر اپنائی جائیں جن میں گھر سے باہر نکلتے وقت عینک کا استعمال، موٹرسائیکل سوار ماسک ، عینک سمیت ہیلمٹ کا استعمال لازمی کریں۔

گھروں اور دفاتر کے دروازے اور کھڑکیاں بند رکھی جائیں۔ روزانہ زیادہ سے زیادہ پانی پئیں، زیادہ سے زیادہ وقت دفتر اور گھر میں گزاریں، صفائی کا خاص خیال رکھا جائے، جھاڑو کی جگہ گیلا کپڑا استعمال کیا جائے۔ باہرسے واپس گھر آتے ہی اپنے ہاتھ اور منہ ٹھنڈے پانی سے دھوئیں، مٹی اور گردغبار والی جگہوں پر نہ جائیں۔ مٹی والی جگہ پر پانی کا چھڑکاؤ لازمی کریں۔ اگر نزلہ زکام، کھانسی، بخار ، گلے کی خراش اورآنکھوں میں سوزش ہو تو فوری طورپر قریبی معالج سے رجوع کریں انہوں نے کہا کہ سموگ دمہ کے مریضوں اورسانس کی بیماری میں مبتلا افراد کے لئے انتہائی خطرناک ہے۔ اس میں زہریلے مادے شامل ہوتے ہیں جس سے آنکھیں سرخ ہوجاتی ہیں۔ اس میں کاربومونو آکسائیڈ، نئٹیروجن آکسائیڈ، میتھین اور کاربن ڈائی اکسائیڈ اور دیگر ذرات شامل ہوتے ہیں ۔ سموگ سے ذرا سی احتیاط انسان کو کئی بیماریوں سے بچا سکتی ہے۔

مزید :

میٹروپولیٹن 4 -